اشاعت کے باوقار 30 سال

اردوٹائمزاسپیشل

  • سلطنت مغلیہ کے زوال کے اسباب کو نصاب میں کئی بار پڑھا لیکن کچھ زیادہ سمجھ نہ آئے بعد میں جب ریڈیو کا زوال دیکھا تو وہ اسباب سمجھنا بہت سہل ہوگیا لیکن تب تک دیر ہوچکی تھی اور اس وقت ممتحن کے اتفاق کی گاڑی چھوٹ چکی تھی، آج نئی نسل کے لیئے ریڈیو کا مطلب ہے ایف ایم کہ جہاں سارا سارا دن لوکل بقراط یا بقراطن کبھی خوابناک لہجے میں سرگوشیاں کرتے تو کبھی خوفناک سے لہجے میں بڑبڑانے و چلاتے سنے جاتے ہیں

  • روشنیوں کا شہر کہتے ہی پہلے جو شہر ذہن میں آتا تھا اسے کراچی کہا جاتا تھا۔ لیکن اب کراچی کا نام سنتے ہی ذہن کی پہلے سے جلتی بتیاں بھی بجھنے لگتی ہیں پھر اب تو پاکستان میں کئی شہر اور بھی ایسے ہیں کہ جہاں بہت ڈھیر سی بتیاں جلنے لگی ہیں اور یوں ان بتیوں کو دیکھنے کیلئے کم ہی لوگ کراچی کا رخ کرتے ہیں، ہاں البتہ بیشمار ایمبولینسوں کی گھومتی بتیوں کو شریک مقابلہ کر لیا جائے تو یہ اب بھی سب سے آگے ہے۔