اشاعت کے باوقار 30 سال

سعودی عرب اور یواے ای قطر پر حملہ کرنا چاہتے تھے

سعودی عرب اور یواے ای قطر پر حملہ کرنا چاہتے تھے

دوحہ: قطر کے وزیر دفاع نے کہا ہے کہ خلیجی ممالک سے سفارتی کشیدگی کے آغاز کے دوران سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات قطر پر حملہ کرنا چاہتے تھے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کو انٹریو دیتے ہوئے قطری وزیر دفاع خالد بن محمد العطیہ کا کہنا تھا کہ قطر کے خلیجی ممالک کے ساتھ سفارتی بحران کے آغاز میں سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات قطر پر حملہ کرنا چاہتے تھے اور انہوں نے اپنے پڑوسی ملک کو غیر مستحکم کرنے کے لیے تمام کوششیں کر لیں لیکن ان کے حملہ کرنے کے ارادے کو ناکام بنا دیا گیا تھا۔ قطری وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ بحران کے آغاز کے دوران دونوں ممالک قطر میں فوجی مداخلت چاہتے تھے جب کہ ہمارے خلاف مساجد کا استعمال بھی کیا گیا اور قبیلوں کو بھی بھڑکانے کی کوشش کی گئی، یہاں تک کہ ہمارے حکمرانوں کی جگہ اپنے چند کٹھ پتلی نمائندے لانے کی بھی کوشش کی گئی تاہم ان کی تمام کوششیں ناکام ہو گئیں کیوں کہ قطری عوام اپنے امیر سے بے انتہا محبت کرتے ہیں۔ واضح رہے گزشتہ سال جون میں سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، مصر اور بحرین نے قطر پردہشت گردی کی معاونت کا الزام عائد کرتے ہوئے سفارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے جب کہ سعودی عرب نے قطر کے ساتھ اپنے زمینی، بحری اور فضائی رابطے بھی منقطع کر دیے تھے البتہ قطر ان تمام تر الزامات کو مسترد کرتا رہا ہے۔

loading...