اشاعت کے باوقار 30 سال

فیدل کاسترو کے بیٹے اینجل کاسترو نے خود کشی کر لی

فیدل کاسترو کے بیٹے اینجل کاسترو نے خود کشی کر لی

ہوانا: کیوبا کے سابق انقلابی رہنما فیدل کاسترو کے بیٹے اینجل کاسترو نے خود کشی کر لی ۔سرکاری میڈیا کے مطابق 68 سالہ اینجل کاسترو دارالحکومت ہوانا میں مردہ پائے گئے اور خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ وہ ڈپریشن کا شکار تھے۔ اینجل کاسترو، فیدل کاسترو کے پہلے بیٹے خاندانی مشابہت کی وجہ سے ’فیدلتو‘ یا ’لٹل فیدل‘ کے نام سے مشہور تھے۔وہ ایک جوہری طبیعیات دان تھے اور انھوں نے سابق سویت یونین سے تربیت حاصل کی تھی۔کیوبا کے سرکاری اخبار گرانما کے مطابق ڈاکٹروں کا ایک گروپ گذشتہ کئی مہینوں سے اینجل کاسترو کا شدید ڈپریشن کی وجہ سے علاج کر رہا تھا۔ سرکاری ٹی وی کے مطابق اینجل کاسترو حالیہ مہینوں میں ایک مقامی ہسپتال میں زیرِ علاج تھے۔ اپنی موت کے وقت وہ کیوبن کونسل آف سٹیٹ میں سائنسی مشیر تھے۔ انھوں نے کیوبا کی اکیڈمی آف سائنسز کے نائب صدر کی حیثیت سے خدمات سر انجام دیں۔ انھوں نے سنہ 1980 سے 1992 کے دوران اپنے ملک کے جوہری پروگرام کی سربراہی کی۔ اینجل کاسترو اپنے والد کی مرتا ڈیاز بالارٹ کے ساتھ پہلی مختصر شادی کے دوران پیدا ہوئے تھے۔ مرتا ڈیاز بالارٹ ایک انقلابی سیاست دان کی بیٹی تھیں۔ اینجل کاسترو کی والدہ کا خاندان امریکی ریاست فلوریڈا منتقل ہو گیا جہاں وہ کاسترو مخالف کمیونٹی میں نمایاں حیثیت اختیار کر گیا۔ ان کے ایک رشتہ دار ماریو ڈیاز بالارٹ امریکی کانگریس کے رکن ہیں۔ اینجنل کاسترو نے اپنی زندگی میں کئی کتابیں لکھیں اور دنیا بھر میں تعلیم سے متعلق منعقد ہونے والے
اجلاسوں میں اپنے ملک کی نمائندگی کی۔ کیوبا کے ذرائع ابلاغ کے مطابق اینجنل کاسترو کا خاندان ان کی آخری رسومات کی منصوبہ بندی کرے گا تاہم اس بارے میں مزید تفصیل فراہم نہیں کی گئیں۔

loading...