اشاعت کے باوقار 30 سال

ملائیشیا اور چین کی پولیس کی مشترکہ کارروائی

ملائیشیا اور چین کی پولیس کی مشترکہ کارروائی

ملائیشیا اور چین کی پولیس نے ایک سیکنڈل کے گروہ کا قلع قمع کر تے ہوئے 140افراد کو گرفتار کر لیا جس نے دونوں ممالک میں لوگوں کو 13ملین آر ایم سے محروم کر دیا ہے۔

تجارتی جرائم کی تحقیقات کے محکمے کے ڈائریکٹر کوم ڈاٹک آمر سنگ نے کہا کہ ہم نے چین میں اپنے ہم منصبوں کے ساتھ بیک وقت کارروائی کا آغاز کیا اور اس کے نتیجے میں ملائیشیا اور چین میں مجموعی طورپر 140ملزموں کو حراست میں لے لیا ۔انہوں نے کہا کہ اس سیکنڈل میں ملوث گروہ کے ارکان ملائیشیا اور چین میں متاثرین کو ٹیلی فون کرتے اور دعویٰ کرتے کہ ان کا تعلق بینک سے ہے اس کے بعد وہ متاثرین کو ڈرا دھمکا کر یہ باور کرانے پر مجبور کرتے کہ ان کے کھاتے کسی مجرمانہ تحقیقات کا حصہ ہیں ، متفکر متاثرین گروہ کے ارکان کی ہدایات پر عمل کرتے اور دھوکہ دہی کا احساس نہ کرتے ہوئے کسی بینک کھاتے میں رقم جمع کرا دیتے۔ کوم آمر نے کہا کہ ملائیشیا میں گرفتار کئے جانیوالے دھوکہ دہی سیکنڈل گروپ کے 65ارکان ملک میں سیاحتی ویزا پر داخل ہوئے اور باور کیا جاتا ہے کہ وہ قریباً 6ماہ سے یہاں سرگرم عمل تھے ۔

ملزمان انتہائی پوش علاقوں کے مکانات سے اپنی کارروائیاں کرتے تھے، ملزمان کو 26دسمبر تک ریمانڈ پر دیدیا گیا ہے اور انہیں ملک بدر کر کے چینی حکام کے حوالے کر دیا جائے گا ، اپنی تفتیش میں اس ٹیم نے ایک آن لائن قمار بازی گروہ کا بھی قلع قمع کیا ہے جو قریباً 2 سال سے اونچائی ا نٹرپرینور ز پارک میں سرگرم عمل تھا ۔ کوم آمر نے کہا کہ اس گرو کے ارکان خواہش مند پنڈتوں سے سوشل میڈیا کے ذریعے رابطہ قائم کرتے اور انہیں قمار بازی کے گروپ میں شامل کر لیتے ، یہ قمار باز اس کے بعد خود اپنے ڈیوائسز استعمال کرتے ہوئے کسی جوئے میں شامل ہوجاتے۔ انہوں نے کہا کہ یہ گروہ اپنی کارروائیوں کے ذریعے قریباً 3لاکھ آر ایم ماہانہ کماتا تھا ۔

loading...