اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

جونز ٹاؤن میں اجتماعی خود کشی

نیو یارک حملے کے ملزم پر دہشت گردی کی فردِ جرم عائد

نیو یارک حملے کے ملزم پر دہشت گردی کی فردِ جرم عائد

نیو یارک : نیو یارک حملے کے ملزم سیف اللہ سائپوف پر مین ہٹن میں آٹھ افراد کو گاڑی سے کچل کر ہلاک کرنے کے الزام میں دہشت گردی کی فردِ جرم عائد کر دی گئی ہے۔ 29 سالہ سائپوف پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کو مادی امداد اور وسائل فراہم کرنے کا الزام بھی لگایا گیا ہے۔ استغاثہ نے کہا کہ سائپوف نے ان سے آزادانہ طور پر گفتگو کی ہے، اور انھوں نے دورانِ حراست خود شہادتی کے عمل سے دست برداری اختیار کی ہے۔ ادھر نیو یارک پولیس نے کہا ہے کہ سائپوف شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ سے متاثر تھے۔ نیو یارک پولیس کے ڈپٹی کمشنر جان ملر نے بتایا کہ مین ہٹن میں کی جانے والی واردات کے جائے وقوعہ سے عربی زبان میں لکھے ہوئے پیغامات ملے ہیں جن میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ یہ حملہ دولتِ اسلامیہ کی جانب سے کیا گیا۔ سیف اللہ سائپوف کا تعلق ازبکستان سے ہے۔ انھیں پولیس نے گولی مار کر زخمی کر دیا تھا اور وہ اس وقت ہسپتال میں زیرِ علاج اور زیرِ حراست ہیں۔ ڈپٹی کمشنر ملر نے کہا کہ 'رات کو کی جانے والی تفتیش سے پتہ چلا ہے کہ سائپوف کئی ہفتوں سے اس حملے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔ 'انھوں نے یہ کام دولتِ اسلامیہ کے نام پر کیا، اور جائے وقوعہ سے ملنے والے کچھ پیغامات اور دوسری چیزوں سے اس بات کا اشارہ ملتا ہے۔' ایسا لگتا ہے کہ انھوں نے دولتِ اسلامیہ کی جانب سے سوشل میڈیا پر دی جانے والی ہدایات پر ہو بہو عمل کیا ہے، وہ ہدایات جن میں اپنے پیروکاروں سے کہا گیا ہے کہ اس قسم کے حملے کس طرح سر انجام دیں پولیس نے ریاست نیو جرسی کے شہر پیٹرسن میں سائپوف کے مکان کو مقفل کر دیا ہے اور وہ وہاں چھان بین کر رہے ہیں۔ حالیہ مہینوں میں دولتِ اسلامیہ کو عراق اور شام میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی جانب سے کیے جانے والے حملوں کی بدولت پے در پے شکستوں کا سامنا کرنا پڑا ہے اور بیشتر علاقوں سے اس کا قبضہ چھڑا لیا گیا ہے۔

loading...