اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

معمر قذافی کو ہلاک کر دیا گیا

گزشتہ پانچ سالوں میں پاک ریلوے کا خسارہ مزید بڑھ گیا

گزشتہ پانچ سالوں میں پاک ریلوے کا خسارہ مزید بڑھ گیا

اسلام آباد: گزشتہ پانچ سالوں کے دوران پاکستان ریلوے کے خسارے میں مزید اضافہ ہو گیا ہے۔ جبکہ وفاقی حکومت کی جانب سے ریلوے کو گزشتہ پانچ سالوں کے دوران مجموعی طور پر 177 ارب روپے سے زائد رقم سبسڈی مد میں ادا کی گئی ہیں۔ گزشتہ پانچ سالوں کے دوران پاکستان ریلوے کی مجموعی آمدن 149 ارب جبکہ اخراجات 307 ارب سے زائد رہے۔ پاکستان ریلوے کو مجموعی طور پر ایک کھرب 77 ارب 86 کروڑ 60 لاکھ روپے سبسڈی کی مد میں اداکئے ہیں جس کے تحت مالی سال 2012-13ء میں 33 ارب 36 کروڑ ساٹھ لاکھ روپے مالی سال 2013-14ء میں 33 ارب 58 کروڑ روپے جبکہ مالی سال 2014-15 کے بعد ہر سال 37 ارب روپے سبسڈی کے طور پر ادا کئے جا رہے ہیں پاکستان ریلوے سے مالی سال 2012-13 کے دوران 18 ارب 7 کروڑ 80 لاکھ کی آمدنی کی جبکہ اسی سال مجموعی اخراجات 48 ارب 58 کروڑ 20 لاکھ روپے رہے۔ اسی طرح مالی سال 2013-14ء کے دوران ریلوے کی آمدنی 22 ارب 80 لاکھ 50 لاکھ روپے جبکہ اخراجات 55 ارب 33 کروڑ 20 لاکھ روپے رہے۔ مالی سال 2014-15ء کے دوران پاکستان ریلوے کے منافع 31 اب 92 کروڑ 70 لاکھ روپے رہا جبکہ اخراجات 59 ارب 17 کروڑ چالیس لاکھ روپے رہے۔ مالی سال 2015-16ء کے دوران پاکستان ریلوے کی آمدنی 36 ارب 58 کروڑ چالیس لاکھ جبکہ اخراجات 63 ارب 57 کروڑ 70 لاکھ روپے جبکہ مالی سال 2016-17ء کے غیر آڈٹ شدہ اعداد و شمار کے مطابق پاکستان ریلوے کا منافع چالیس ارب آٹھ کروڑ تیس لاکھ روپے اور اخراجات 80 ارب 78 کروڑ 40 لاکھ روپے تک پہنچ گئے ہیں اعداد و شمار کے مطابق پاکستان ریلوے کے خسارے میں مزید اضافہ ہو رہا ہے اور یہ خسارہ آمدن کے دوگنا حصے تک پہنچ گیا ہے۔