اشاعت کے باوقار 30 سال

مذہبی فسادات کے اعتبار سے بھارت چوتھے نمبر پر

مذہبی فسادات کے اعتبار سے بھارت چوتھے نمبر پر

نئی دہلی: جمہور ی ملک کا را گ الاپنے والا بھارت شام، عراق اور نائیجیریا کے بعد مذہبی فسادات کے اعتبار سے چوتھے نمبر پر آ گیا جب کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے دور اقتدار میں بھارت میں گروہی تشدد کے واقعات میں اضا فہ ہوا ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سن 2014 سے 2017 کے درمیان گروہی تشدد 28 فی صد بڑھا ہے۔ بھارت کی ایک صحافتی ویب سائٹ نے وزارت داخلہ کے اعداد و شمار کے حوالے سے بتایا ہے کہ 2014 سے 2017 کے درمیان گروہی تشدد میں 28 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ گزشتہ سال تشدد کے 822 واقعات ریکارڈ پر آئے۔ سب سے بدتر حالات ریاست اتر پردیش کے ہیں جہاں 10 سالوں کے دوران ریکارڈ 1400 واقعات ہوئے۔ سن 2015 میں شام، عراق اور نائیجیریا کے بعد مذہبی فساد کے اعتبار سے بھارت کا چوتھا نمبر تھا، جہاں 10 سال میں اوسطاً روزانہ 2 افراد قتل ہوئے۔

loading...