اشاعت کے باوقار 30 سال

عابد باکسر نے مجھے وحشیانہ جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا

عابد باکسر نے مجھے وحشیانہ جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا

لاہور: معروف سٹیج و فلمی اداکارہ نرگس نے کہا ہے کہ عابد باکسر نے مجھ سے ایک کروڑ اور گھر کے کاغذات مانگے ، انکار پر مجھے وحشیانہ جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا ، میرے سر کے بال او ر بھنویں بھی کاٹ دیں ۔ اپنے ایک بیان میں اداکارہ کا کہنا تھا کہ عابد باکسر نے مجھے تشدد کے ساتھ کئی گھنٹے تک یرغمال بنائے رکھا جس کا مقدمہ جوہر ٹان تھانے میں عابد باکسر اور ساتھیوں کے خلاف 28 مارچ 2002 کو درج ہوا۔ نرگس کا کہنا تھا کہ عابد باکسر انہیں گزشتہ چار سال سے بلیک میل کر رہا تھا جب کہ نرگس کے والد نے موقف اپنایا کہ ان کی بیٹی دیدار کے گھر میں ڈکیتی میں بھی عابد باکسر ملوث تھا۔ اداکارہ کا کہنا تھا کہ مجھ پر اتنا تشدد ہوا کہ وہ ماں بننے کی صلاحیت سے بھی محروم ہو گئی تھیں۔ تاہم اس واقعہ کے تین چار روز کے بعد گوالمنڈی کی ایک اہم شخصیت کے گھر ان دونوں کی صلح ہو گئی۔ اس صلح کے بعد نرگس کینیڈا چلی گئیں جہاں انہوں نے ایک پاکستانی فلم پروڈیوسر زبیر شاہ سے شادی کر لی۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ عابد باکسر نے پروڈیوسر ارشد چودھری کے ذریعے الفلاح تھیٹر ٹھیکے پر حاصل کیا اور وہاں پر لاہور کی مہنگے ترین فنکار کاسٹ کرکے ڈراموں کاروبار شروع کیا۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ آج بھی الفلاح تھیٹر میں عابد باکسر کی سرمایہ کاری ہے اور پروڈیوسر ارشد چودھری اسے ماہانہ منافع ادا کرتا ہے۔

loading...