اشاعت کے باوقار 30 سال

ایسا لگا جیسے ہماری ٹیم پر جادو کر دیا گیا

ایسا لگا جیسے ہماری ٹیم پر جادو کر دیا گیا

کراچی: آئی سی سی انڈر 19 ورلڈ کپ میں شرکت کرنے والی پاکستان جونیئر ٹیم کے منیجر سابق ٹیسٹ کرکٹر ندیم خان نے کہا ہے کہ سیمی فائنل میں بھارت کے ہاتھوں عبرت ناک شکست حیران کن رہی، ایسا لگا جیسے ہماری ٹیم پر جادو کر دیا گیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان جونیئر ٹیم کے منیجر ندیم خان نے بتایا کہ بھارتی کوچ راہول ڈریوڈ نے پاکستانی ڈریسنگ روم میں آ کر ہمارے کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی، انھوں نے کہا کہ یونس خان جیسے عظیم کرکٹر کو مستقل بنیادوں پر کوچنگ کی ذمہ داری سونپی جائے تو پاکستان اگلا جونیئر ورلڈ کپ جیت سکتا ہے۔
ندیم خان نے کہا کہ ایونٹ میں پاکستان کی مجموعی کارکردگی اطمینان بخش نہیں قرار دی جا سکتی، ہم ٹائٹل جیتنے کا عزم لے کر گئے تھے لیکن تیسری پوزیشن پر انحصار کرنا پڑا، ٹیم اسکلز اور ڈیولپمنٹ کے شعبوں میں دیگر ٹیموں کے مقابلے میں بہت پیچھے تھی، کھلاڑیوں کو ہم آہنگ ہو کر کھیلنے کا موقع ہی نہیں مل سکا، ان میں انڈر اسٹینڈنگ کی کمی رہی، اس کے باوجود ابتدائی مقابلوں میں عمدہ کارکردگی پیش کی اور سیمی فائنل میں رسائی پانے میں کامیاب رہے۔ ٹیم منیجر نے کہا کہ روایتی حریف بھارت کے خلاف ہماری ٹیم بُری طرح دباؤ کا شکار ہو کر محض 59 رنز پر ڈھیر ہو گئی، سب کو امید تھی کہ مقابلہ سنسنی خیز رہے گا لیکن ایسا نہ ہوا، ہمیں ایسا لگا کہ کہیں ٹیم پر جادو تو نہیں کر دیا گیا، حریف ٹیم میں بھرپور اعتماد تھا، وہ راہول ڈریوڈ کی نگرانی میں مسلسل ٹریننگ میں مصروف تھی، ڈریوڈ نے ہمارے ڈریسنگ روم پہنچ کر پاکستانی جونیئر کرکٹرز کی ہمت افزائی کی اور مسلسل محنت کے ساتھ تیکنیک کو مزید بہتر بنانے کا مشورہ دیا۔ ایک سوال پر ندیم خان نے کہا کہ سلیکٹرز نے دستیاب کھلاڑیوں پر مشتمل بہترین ٹیم منتخب کی تھی، اسے تنقید کا نشانہ بنانے کے بجائے مستقبل پر نظر رکھنے کی ضرورت ہو گی، یونس خان جیسے کسی بڑے کرکٹر کو کوچنگ سونپنے سے بہتر نتائج سامنے آ سکتے ہیں، انھوں نے کہا کہ فاسٹ باؤلر شاہین شاہ آفریدی کی درست سمت میں رہنمائی ہو تو وہ مستقبل میں پاکستان کرکٹ کا اثاثہ ثابت ہو سکتے ہیں۔ ندیم خان نے کہا کہ میں ایونٹ کے حوالے سے اگلے چند روز میں متعدد تجاویز کے ساتھ اپنی رپورٹ مرتب کر کے پی سی بی کو پیش کروں گا۔

loading...