اشاعت کے باوقار 30 سال

پنجاب حکومت نے خصوصی بچوں کے ساتھ ہاتھ کر دیا

پنجاب حکومت نے خصوصی بچوں کے ساتھ ہاتھ کر دیا

لاہور: پنجاب حکومت کے زیر اہتمام نیشنل گیمز 2018 میں شریک ہونے والے خصوصی بچوں کے ساتھ پنجاب حکومت نے ہاتھ کر دیا ، مقابلوں میں گولڈ اور سلور میڈل حاصل کرنے والے خصوصی بچوں کو اردو بازار سے منگوا کر 10 روپے مالیت کے میڈلز تھما دئے گئے ، ان مقابلوں میں ملک بھر سے درجنوں خصوصی بچوں نے شرکت کی تھی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق 27 تا 29 جنوری 2018 چار دنوں کے لئے قذافی سٹیڈیم لاہور میں نیشنل گیمز کا انعقاد کیا گیا، ان گیمز میں آزاد کشمیر اور کراچی سمیت چاروں صوبوں سے درجنوں بچوں نے شرکت کی۔ ان مقابلوں میں میرپور آزاد کشمیر کے ایک نجی سکول کے معذور بچوں نے بھی حصہ لیا۔ نیشنل گیمز میں میرپور آزاد کشمیر سے تعلق رکھنے والی ماہ نور نے سونے اور چاندی کا 1،1 میڈل حاصل کیا۔ حکومت پنجاب کی جانب سے بچوں کی اس کارکردگی کو خوب سراہا گیا مگر ان گیمز میں محکمہ سپورٹس نے خصوصی بچوں کو بھی چونا لگا دیا ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میرپور کی رہائشی ماہ نور کے ماموں رفاقت علی کا کہنا تھا کہ ہمارے بچے وہیل چیئرز اور بیساکھیوں کے سہارے مقابلوں میں شریک ہوئے، انہوں نے مقابلے جیتنے کے لئے جی توڑ محنت کی مگر جب وہ میڈل لے کر آبائی علاقوں میں پہنچے تو انہیں معلوم ہوا کہ یہ میڈل تو نقلی ہیں۔ رفاقت علی کا مزید کہنا تھا کہ ماہ نور نے نیشنل گیمز میں سونے اور چاندی کا ایک ایک میڈل حاصل کیا۔ بچی خوشی سے پھولی نہیں سما رہی تھی جب کہ ہم نے بھی اس کی آمد پر جشن کی بھرپور تیاری کر رکھی تھی مگر جب ماہ نور گھر پہنچی تو شرم سے ہمارے سر جھک گئے ، کیوں کہ پنجاب حکومت نے اصلی میڈلز دینے کی بجائے 10،10 روپے والے نقلی میڈلز بچوں کو دئے تھے۔ ہمیں پنجاب حکومت کے اس اقدام پر سخت شرمندگی ہو رہی ہے کیوں کہ انہوں نے سپیشل بچوں کو بھی معاف نہیں کیا اور انہیں جعلی میڈلز دے دئے۔

loading...