اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

سیارہ پلوٹو کی دریافت

سعودی ارب پتی شہزادے ولید بن طلال کو رہا کر دیا گیا

سعودی ارب پتی شہزادے ولید بن طلال کو رہا کر دیا گیا

ریاض: سعودی حکام نے ارب پتی شہزادے ولید بن طلال کو رہا کر دیا ۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق شہزادہ ولید بن طلال کے اہل خانہ نے تصدیق کی ہے کہ انہیں رہا کر دیا گیا ہے اور اب وہ گھر بھی آ گئے ہیں ۔دنیا کے امیر ترین افراد میں شامل سعودی ارب پتی شہزادے ولید بن طلال کو اینٹی کرپشن مہم کے دوران گرفتار کیا گیا تھا۔ رہائی سے کچھ دیر قبل برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز نے شہزادہ ولید بن طلال کا ریاض کے رٹز کارلٹن ہوٹل میں انٹرویو کیا تھا۔ انہوں نے اپنے انٹرویو میں کہا کہ وہ حکام کے ساتھ ہونے والی تفتیش میں مسلسل اپنی بے گناہی ثابت کرنے میں کامیاب ہو چکے ہیں، انہیں امید ہے کہ وہ بہت جلد اپنی بین الاقوامی سرمایہ کار کمپنی کنگڈم ہولڈنگز کے تمام اثاثے واپس حاصل کر لیں گے, اس میں سے کچھ بھی حکومت کو نہیں دینا پڑے گا اور آئندہ چند دنوں میں رہا کر دیا جائے گا۔ شہزادہ ولید بن طلال نے کہا کہ وہ شہزادہ محمد بن سلمان کی جانب سے شروع کی جانے والی اصلاحات کی مکمل حمایت کرتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ غلط فہمی کی بنا پر مجھے گرفتار کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ان پر کوئی الزامات عائد نہیں کیے گئے بلکہ ان کے حکومت کے ساتھ بعض معاملات پر مذاکرات ہو رہے ہیں اور امید ہے کہ آئندہ چند روز میں تمام مسائل حل ہو جائیں گے۔ شہزادہ ولید بن طلال نے رہائی کے بعد سعودی عرب میں قیام کرنے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں کہا کہ وہ کسی طور بھی سعودی عرب چھوڑ کر نہیں جائیں گے کیونکہ یہی ان کا ملک ہے۔ ’ یہ میرا ملک ہے، میرا خاندان، بچے ، پوتے پوتیاں یہیں پر ہیں، میرے اثاثے بھی سعودی عرب میں ہیں اس لیے اپنے ملک سے وفاداری پر سمجھوتہ نہیں کروں گا‘۔
انٹرویو کے کچھ دیر بعد شہزادہ طلال بن ولید کی رہائی کی بھی خبر آ گئی اور ان کے خاندان نے بھی اس کی تصدیق کر دی تاہم ابھی تک سعودی حکام کی جانب سے اس خبر کی تصدیق یا تردید نہیں کی گئی ۔

loading...