اشاعت کے باوقار 30 سال

ن لیگ نے تحریک انصاف کے الزامات مسترد کر دیئے

ن لیگ نے تحریک انصاف کے الزامات مسترد کر دیئے

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) نے الیکشن کمیشن میں 10 سال کے پارٹی اکاؤنٹس کی تفصیلات اور جواب جمع کرا دیا ہے۔ جواب میں استدعا کی گئی ہے کہ تحریک انصاف کی درخواست مسترد کر کے جرمانہ عائد کیا جائے۔ تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں ن لیگ غیر ملکی فنڈنگ کیس کی سماعت ہوئی، ممبر پنجاب الطاف ابراہیم کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی دوران سماعت مسلم لیگ ن کے وکیل بیرسٹر عثمان گھمن نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے 10 سال کے پارٹی اکاؤنٹس کی تفصیلات اور جواب جمع کروا دیا ہے مسلم لیگ ن کی جانب سے جمع کرائے جانے والے جواب میں کہا گیا ہے کہ شکایت کنندہ نے بوگس اور مضحکہ خیز درخواست دائر کی ہے اس درخواست کا مقصد تحریک انصاف کے خلاف چلنے والے کیس کو بیلنس کرنا ہے جواب میں کہا گیا ہے کہ تحریک انصاف کی جانب سے دائر کی جانے والی درخواست میں پرانے قانون کی شقوں کا حوالہ دیا گیا ہے جو کہ اب تبدیل ہو چکا ہے مسلم لیگ ن نے بیرون ملک سے ممنوعہ فنڈنگ نہیں لی ہے اور ن لیگ برطانیہ جمہوریت کے فروغ کے لئے کام کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ درخواست کے ساتھ چیرمین مسلم ن راجہ ظفر الحق کا بیان حلفی اور آڈیٹرز کی رپورٹ بھی منسلک ہے انہوں نے کہا کہ درخواست گزار پارٹی کا متاثرہ فریق نہیں ہے اور وہ درخواست نہیں دے سکتا ہے مسلم لیگ ن 2002 سے پارٹی تفصیلات جمع کرا رہی ہے مسلم لیگ ن کسی ممنوعہ ذرائع سے کبھی فنڈنگ حاصل نہیں کئے ہیں اور تحریک انصاف کے غیر ملکی فنڈنگ کے الزامات کو مسترد کرتے ہیں جواب میں الیکشن کمیشن سے استدعا کی گئی ہے کہ تحریک انصاف کی درخواست مسترد کرکے جرمانہ عائد کیا جائے اس موقع پر ممبر کمیشن الطاف ابراہیم نے کہا کہ اتنی تاخیر سے جواب جمع کرانے کا کیا فائدہ ہے سماعت کے دوران تحریک انصاف کے وکیل نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے جواب میں راجہ ظفر الحق کا بیان حلفی لگایا ہے راجہ ظفر الحق کو پاور آف اٹارنی دے کر بیان حلفی لگایا جا سکتا ہے الیکشن کمیشن نے کیس کی سماعت یکم فروری تک ملتوی کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے وکیل کو ہدایت کی کہ اگلی پیشی پر راجہ ظفر الحق کا پاور آف اٹارنی جمع کرایا جائے سماعت کے بعد الیکشن کمیشن کے باہر تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی سیاسی جماعتیں الیکشن کمیشن کے سامنے فنڈز کے ذرائع بتانے کے پابند ہیں تحریک انصاف نے اپنی تمام تفصیلات الیکشن کمیشن کے سامنے پیش کیے ہوئے ہیں جبکہ مسلم لیگ ن پارٹی فنڈنگ کیس پر جوتے اتار کر بھاگ رہی ہے انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے 2013 میں میڈیا مہم پر ساڑھے تین ارب روپے خرچ کیے ہیں جبکہ پورے ملک میں مسلم لیگ ن کا ایک بھی دفتر نہیں ہے انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کو منو خان نامی ڈرائیور 18 کروڑ روپے کہاں سے جمع کرا رہا ہے مسلم لیگ ن نے پارٹی فنڈنگ کو منی لانڈرنگ کے طور پر استعمال کیا ہے انہوں نے کہا کہ نواز شریف اکیلے ہی نہیں بلکہ ان کے دائیں بائیں کھڑے لوگ بھی ساتھ ملوث ہیں خواجہ آصف بینک کلرک، مشاہداللہ پی آئی اے میں لوڈر اور اسحاق ڈار کی پان کی دکان تھی نواز شریف کی سیاست میں آنے سے پہلے کمائی ٹکوں میں تھی اور اب ان کے پاس دس دس کروڑ کی گاڑیاں ہیں اس موقع پر تحریک انصاف کے رہنما فرخ حبیب نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ کی جانب سے یقین دہانیوں کے باوجود چار پیشیوں کے بعد جواب جمع کروایا گیا ہے انہوں نے کہا کہ نواز شریف غیر ملکی فنڈنگ کے معاملے پر خود سامنے آنے کی بجائے راجہ ظفرالحق کے پیچھے چھپ رہے ہیں مگر ہم اس کو چھپنے نہیں دیں گے۔

loading...