اشاعت کے باوقار 30 سال

قوم ایمان، اتحاد اور نظم و ضبط کا سنہری اصول مضبوطی سے تھام لے

قوم ایمان، اتحاد اور نظم و ضبط کا سنہری اصول مضبوطی سے تھام لے

کراچی: صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ وطن عزیز کو درپیش داخلی اور خارجی چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے تحریک پاکستان کے جذبے سے کام لینے کی ضرورت ہے، اس لیے قوم ایمان، اتحاد اور نظم و ضبط کا سنہری اصول مضبوطی سے تھام لے۔ صدر مملکت نے یہ بات مزار قائد کے دورے کے موقع پر قائد اعظم مزار مینجمنٹ بورڈ کے اجلاس کی صدارت کے موقع پر اپنے افتتاحی کلمات میں کہی۔ اس موقع پر وزیر اعظم کے مشیر برائے قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن عرفان صدیقی، میئر کراچی وسیم اختر اور بورڈ کے دیگر ارکان بھی موجود تھے۔ اجلاس سے قبل صدر مملکت نے مزار قائد پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی بھی کی۔ صدر مملکت نے کہا کہ قائد اعظم شاندار شخصیت کے مالک تھے جنھوں نے اپنے عزم مصمم اور آہنی ارادے سے کام لے کر قیام پاکستان کی صورت میں تاریخ کا عظیم النظیر کارنامہ انجام دیا۔ انھوں نے کہا کہ قائد اعظم کے نوادرات دیکھ کر ان کی شخصیت کو زیادہ آسانی سے سمجھا جا سکتا ہے۔ انھیں خوشی ہے کہ وزیر اعظم کے مشیر عرفان صدیقی کی قیادت میں قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن مزار قائد اور نواردات قائد کی بہترین نگرانی کر رہا ہے جس پر وہ لائق تحسین ہیں۔ انھوں نے کہا کہ حکومت قائد اعظم کے افکار کے فروغ کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے گی۔ اس سلسلے میں اخراجات کو خاطر میں نہیں لایا جائے گا۔ انھوں نے قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن کے زیر اہتمام مزار قائد پر ترقیاتی کاموں سمیت دیگر تمام ترقیاتی منصوبوں کی تعریف کی اور کہ ان کاموں کی تکمیل سے ملک کا نظریاتی تشخص اجاگر ہو گا۔ صدر مملکت نے مزار قائد پر مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات میں کہا کہ بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح نے اپنی ولولہ انگیز قیادت سے قوم کو اس کے وجود کا احساس دلایا اور اس میں اتحاد پیدا کر کے اس سے تاریخ کا ناقابل یقین کام لیا۔ وطن عزیز آج بھی جن چیلنجوں کا سامنا کر رہا ہے، ان سے نمٹنے کے لیے بھی اسی جذبے سے کام لینے کی ضرورت ہے۔ اتحاد ، ایمان اور نظم و ضبط کا سنہری اصول مضبوطی سے تھام لیا جائے تو آج بھی منزل آسان ہو سکتی ہے۔ وزیر اعظم کے مشیر عرفان صدیقی نے اس موقع پر صدر مملکت کو مزار قائد اعظم میں جاری ترقیاتی منصوبوں سے آگاہ کیا اور بتایا کہ سیاحوں کو بابائے قوم کے افکار سے آگاہ کرنے کے لیے ان کی شخصیت سے وابستہ سووینئر مزار قائد پر رکھے جائیں گے اور قائد اعظم اکیڈمی کو مزار قائد کے احاطے میں منتقل کیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ قائد اعظم اکیڈمی کو تحقیقی اور ثقافتی مرکز بنا کر ان کی شخصیت کے شایان شان بنا دیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ صدر مملکت کا بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح اور تحریک پاکستان کے تمام قائدین سے قلبی اور روحانی رشتہ ہے ،اس لیے وہ قومی شناخت کے سلسلے میں ہونے والی سرگرمیوں کی ہمیشہ حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔ انھوں نے مزید بتایا کہ مزار قائد سے ملحق پاکستان پارک بنایا جاے گا جس میں وطن عزیز کے تمام علاقوں کے نمایاں مقامات کے مونومنٹ نصب کئے جائیں گے تاکہ مزار قائد اعظم پر آنے والے زائرین اور سیاح ایک ہی نظر میں پاکستان کے تمام اہم مقامات کو دیکھ سکیں۔

loading...