اشاعت کے باوقار 30 سال

امن و استحکام کے لئے پاکستان کا عزم غیر متزلزل ہے

امن و استحکام کے لئے پاکستان کا عزم غیر متزلزل ہے

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ آپریشن رد الفساد کے تحت دہشت گردوں کے خلاف رنگ و نسل سے بالا تر ہو کر کاروائیاں کر رہے ہیں، بلاامتیاز کارروائی کے لئے افغان مہاجرین کی واپسی ناگزیر ہے۔ دو طرفہ سرحدی نظام کا استحکام کابل کی بھی ترجیح ہونی چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز امریکی سینٹ کام کے کمانڈر جنرل جوزف ووٹل سے ٹیلی فونک رابطے میں کیا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل جوزف وٹل نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ٹیلی فونک رابطہ کیا۔ امریکی صدر ٹرمپ کے ٹویٹ کے بعد پاک امریکہ سیکیورٹی تعاون پر رابطے کے موقع پر امریکی سینٹرل کمانڈ کے کمانڈر جنرل جوزف ووٹل نے بات چیت میں جنرل قمر جاوید باجوہ کو پاکستان میں افغان باشندوں کی سرگرمیوں پر امریکی تشویش سے آگاہ کرنے کے ساتھ ساتھ سیکیورٹی معاونت اور کوپشن سپورٹ فنڈ پر امریکی فیصلے سے آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں پاکستان کے کردار کی قدر کرتا ہے۔ اس موقع پر جنرل جاوید باجوہ نے کہا کہ پاکستان آپریشن رد الفساد کے تحت پہلے بھی متعدد اقدامات کر رہا ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان آپریشن رد الفساد کے تحت دہشت گردوں کے خلاف رنگ و نسل سے بالاتر کاروائی کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلا امتیاز کاروائی کے لئے افغان مہاجرین کی واپسی ناگزیر ہے۔ پاکستان یکطرفہ طور پر سرحدی نظم و نسق مستحکم بنا رہا ہے۔ دونوں سرحدی نظام کا استحکام نہیں بلکہ قربانیوں اور مثبت کردار کا اعتراف چاہتے ہیں۔ انسداد دہشت گردی، امن و استحکام کے لئے پاکستان کا عزم غیر متزلزل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو قربانی کا بکرا نہ بنایا جائے۔ افغان امن کے لئے اقدامات کی حمایت جاری رکھیں گے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ نے مزید کہا کہ خطے میں امن و استحکام کے لئے افغانستان میں امن ناگزیر ہے۔

loading...