اشاعت کے باوقار 30 سال

گوئٹے مالا کا بھی اپنا سفارت خانہ بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان

گوئٹے مالا کا بھی اپنا سفارت خانہ بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان

گوئٹےمالاسٹی: امریکا کے بعد لاطینی امریکی ملک گوئٹے مالا نے بھی اپنا سفارتخانہ تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان کر دیا۔ برطانوی میڈیا کے مطابق گوئٹے مالا کے صدر جمی موریلس نے اسرائیل میں موجود اپنے سفارت خانے کو یروشلم منتقل کرنے کا حکم دیا ہے۔ جمی موریلس نے فیس بک پوسٹ پر کہا کہ انہوں نے یہ فیصلہ اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو سے بات کرنے کے بعد کیا۔ اپنے بیان میں صدر موریلس نے کہا کہ گوئٹے مالا اسرائیل کا دیرینہ دوست ہے، انہوں نے متعلقہ حکام سے کہا ہے کہ وہ گوئٹے مالا کا سفارت خانہ تل ابیب سے یروشلم منتقل کرنے کے لیے ضروری اقدامات کر لیں۔
واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے وہ قرارداد منظور کی تھی جس میں امریکا سے کہا گیا ہے کہ وہ مقبوضہ بیت المقدس یا مشرقی یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کا اعلان واپس لے۔ اس قرارداد کے حق میں 128 ممالک نے ووٹ دیا، 35 نے رائے شماری میں حصہ نہیں لیا جب کہ 9 نے اس قرار داد کی مخالفت کی۔ قرارداد کی مخالفت کرنے والے ملکوں میں ایک گوئٹے مالا بھی تھا۔

loading...