اشاعت کے باوقار 30 سال

بھارتیوں نے پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان سے غلط کیا

بھارتیوں نے پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان سے غلط کیا

ممبئی: پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان کی پہلی بولی ووڈ فلم ’رئیس‘ کے ڈائریکٹر راہول ڈھولکیا کو ایک سال بعد خیال آہی گیا کہ بھارتیوں نے پاکستانی اداکارہ کے ساتھ غلط کیا گیا۔ خیال رہے کہ ’رئیس‘ کو رواں برس کے آغاز میں 25 جنوری کو بھارت سمیت دنیا بھر میں ریلیز کیا گیا تھا، تاہم اسے پاکستان میں پیش نہیں کیا تھا۔ ماہرہ خان کی فلم ریلیز ہوتے وقت پاکستان اور بھارت کے درمیان تنازعہ چل رہا تھا، جس وجہ سے جہاں اس فلم کو پاکستان میں پیش نہیں کیا گیا، وہیں بھارتی عوام کی جانب سے بھی پاکستانی اداکاروں کے خلاف احتجاج و مظاہرے دیکھنے میں آئے۔ بھارتی انتہا پسندوں نے نہ صرف پاکستانی اداکاروں کی فلموں کی شوٹنگ کو مؤخر کرنے کے لئے فلم سازوں پر دباؤ ڈالا تھا، بلکہ پاکستانی اداکاروں کو برا بھلا بھی کہا تھا۔ بھارتی انتہا پسندوں نے جن پاکستانی اداکاروں کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا، ان میں ماہرہ خان سر فہرست تھیں، جب کہ دوسرے نمبر پر فواد خان تھے۔ تاہم قریبا ایک سال کے بعد فلم ’رئیس‘ کے ہدایت کار راہول ڈھولکیا نے ماہرہ خان کے حق میں بات کرتے ہوئے تسلیم کیا کہ ’ہندوستانیوں نے ماہرہ خان کے ساتھ غلط برتاؤ کیا‘۔ راہول ڈھولکیا نے بھارتی شوبز نیوز ویب سائٹ ’بولی وڈ ہنگامہ‘ کی ویڈیو کلپ ٹوئٹ کی، جس میں اداکارہ ماہرہ خان راہول ڈھولکیا اور شاہ رخ خان سمیت فلم رئیس کی ٹیم اور دیگر بھارتی آرٹسٹوں کی تعریف کرتی دکھائی دیں۔ ماہرہ خان نے دبئی میں ہونے والے مصالحہ ایوارڈز 2017 کے موقع پر بولی وڈ ہنگامہ سے گفتگو کی، جس کی ویڈیو ٹوئٹر پر بھی جاری کی گئی۔ راہول ڈھولکیا نے ویڈیو ٹوئیٹ کرتے ہوئے ماہرہ خان کے بیان کو معصومانہ اور خوبصورت قرار دیا۔ راہول ڈھولکیا نے ٹوئیٹ کے کیپشن میں مزید لکھا کہ انہیں لگتا ہے کہ ہندوستانیوں نے ماہرہ خان کے ساتھ غلط برتاؤ کیا۔فلم ڈائریکٹر نے اعتراف کیا کہ ہم نے ایک اداکار کے طور پر ان کے ساتھ ٹھیک برتاؤ نہیں کیا۔

loading...