اشاعت کے باوقار 30 سال

آسکر ایوارڈ کے لئے پاکستانی فلموں کی نامزدگی بڑی کامیابی ہے

آسکر ایوارڈ کے لئے پاکستانی فلموں کی نامزدگی بڑی کامیابی ہے

لاہور: اداکارہ و ماڈل سوہائے علی آبڑو نے کہا ہے کہ آسکر ایوارڈ کے لئے پاکستانی فلموں کی نامزدگی بہت بڑی کامیابی ہے جب کہ منفرد موضوعات پر بننے والی ایکشن ، رومانس اور مزاح سے بھرپور فلمیں شائقین کی توجہ کا مرکز بنی ہوئی ہیں۔ اپنے ایک انٹرویو میں سوہائے علی آبڑو نے کہا کہ آسکر ایوارڈز تک پاکستانی فلموں کاپہنچنا ایک دورمیں خواب لگتا تھا مگراب ہماری فلموں کی نامزدگی ہونے لگی ہے اور وہ وقت دور نہیں جب ہماری فلمیں نہ صرف آسکر ایوارڈ جیتا کریں گی بلکہ ہمارے فن کاروں کو ہالی ووڈ میں کام کی پیشکش بھی ہوا کرے گی۔ سوہائے علی ابڑو نے کہا کہ نوجوان فلم میکراور فن کار مل کرایک ایسے ٹریک پر آگے بڑھ رہے ہیں جس کے ذریعے بہت جلد ہم انٹرنیشنل مارکیٹ تک رسائی پالیں گے۔ انھوں نے کہا کہ فنون لطیفہ میں فلم ایک ایسا شعبہ ہے جو لوگوں کے سب سے قریب ہے جب کہ پاکستان فلم انڈسٹری کے معروف فن کاروں کے چاہنے والوں کی بڑی تعداد آج بھی موجود ہے، جو ان کے کام کو پسند کرتی تھی بلکہ ان کے متعارف کروائے گئے ملبوسات، ہیئر اسٹائل، جیولری، جوتے اور دیگر کو آج بھی سراہتی ہے۔ یہ ایک فلم اسٹارکی سب سے بڑی خوبی اور کامیابی مانی جاتی ہے۔ اداکارہ نے کہا کہ آج کا دور جدید ٹیکنالوجی کا دور ہے اور اب جس طرح سے فیشن کی دنیا میں حیرت انگیز تبدیلی آ چکی ہے، اسی طرح فلم سازی کے کام اور اس شعبے سے وابستہ لوگوں کی سوچ بھی بدل چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب کارپوریٹ سیکٹر فلم سازی کے شعبے میں نمایاں کام کر رہا ہے۔ ان کی بدولت جہاں نوجوان فلم میکر منفرد موضوعات پر فلمیں بنارہے ہیں، وہیں کمرشل ازم کے فروغ اور کارپوریٹ سیکٹر کی پراڈکٹس کی تشہیر بھی بڑی خوبی سے ہو رہی ہے۔ یہ وقت کی ضرورت ہے کیونکہ پاکستان میں فلم انڈسٹری جس بحران سے دو چار تھی، اس کی بہتری کی بات کرنا ایک دور میں بالکل جھوٹ لگتا تھا مگر اب صورت حال بہتر ہو رہی ہے۔

loading...