اشاعت کے باوقار 30 سال

گھریلو کمرشل کچنز اور فیس بک کا استعمال

گھریلو کمرشل کچنز اور فیس بک کا استعمال

پشاور: خیبر پختون خوا کے دارالحکومت پشاور میں کچھ خواتین نے گھر کی مالی مشکلات پر قابو پانے کے لیے اپنے کچن میں ہی اپنا کاروبار شروع کر دیا ہے اور اس کے لیے سوشل میڈیا خاص طور پر فیس بک کا استعمال کیا جا رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق صائمہ ایک گھریلو خاتون ہیں، وہ اپنے کچن میں ہر طرح کے گھریلو کھانے تیار کر کے کمرشل بنیادوں پر فراہم کرتی ہیں۔ صائمہ کا کہنا تھا کہ میں نے 600 روپے کی ڈشز خریدیں تو میں کافی پریشان تھی کہ یہ نکلیں گی کہ نہیں نکلیں گی، آرڈرز جائیں گے کہ نہیں جائیں گے۔ اور اب ماشاء اللہ سے ہر مہینے نہیں تو ہر دو مہینے میں تقریباً 10 سے 15 ہزار کی میں ڈشز لا رہی ہوں، اس سے آپ اندازہ لگائیں کہ آرڈرز نکل رہے ہیں تو میں ڈشز لا رہی ہوں۔ یہ کاروبار سوشل میڈیا پر نوجوانوں میں زیادہ مقبول ہے۔ کچن میں کام کرنے والی خواتین کو زیادہ تر آرڈرز فیس بک کے ذریعے ملتے ہیں۔ صوبہ میں تیزی سے مقبول ہونے والے اس نئے کاروبار میں 70 فی صد تک گھریلو خواتین اور 30 فی صد طالبات بھی شامل ہیں۔ گھروں سے چلنے والے ان کمرشل کچنز کی تعداد 50 تک بتائی جاتی ہے لیکن ان میں 20 سے 30 کچنز فعال ہیں۔ گھریلو کچن کی بنی ہوئی اشیاء کچھ عرصے تک یہاں بڑے سٹورز پہ بھی دستیاب تھیں لیکن ان پر پابندی لگا دی گئی اور وجہ بتائی گئی فوڈ ڈیپارٹمنٹ کی شرائط۔ لیکن اب بھی یہ اشیا آپ کے گھروں میں آپ کے آرڈر پر ضرور دستیاب ہوتی ہیں۔

loading...