اشاعت کے باوقار 30 سال

ٹرمپ نے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارلحکومت تسلیم کر لیا

ٹرمپ نے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارلحکومت تسلیم کر لیا

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکی سفارت خانہ تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان کر دیا ۔امریکی میڈیا کے مطابق بدھ کے روز ایک اجلاس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکی سفارت خانہ تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ بیت المقدس میں تمام مذاہب کے لوگ آزاد زندگی گزار رہے ہیں ، مقبوضہ بیت المقدس میں اسراٗیل کی پارلیمنٹ بھی موجود ہے ، اسرائیلی صدر و وزیر اعظم کی رہائش گاہ بھی اب مقبوضہ بیت امقدس میں ہو گی، مقبوضہ بیت المقدس میں کسی دوسرے ملک کا سفارت خانہ نہیں ہے،کئی امریکی صدور نے امریکی سفارت خانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کا سوچا لیکن نہیں کر سکے ، ہمت کی بات تھی یا انہوں نے اپنا ذہن تبدیل کر لیا کچھ کہہ نہیں سکتا، اب وقت آ گیا ہے کہ امریکی سفارت خانہ مقبوضہ بیت امقدس منتقل کیا جائے، امریکی سفارت خانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کا عمل 6 ماہ بعد ہو گا ۔

loading...