اشاعت کے باوقار 30 سال

نواز شریف اس ملک کی فوج کو تباہ کرنا چاہتے ہیں

نواز شریف اس ملک کی فوج کو تباہ کرنا چاہتے ہیں

اسلام آباد: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ ایبٹ آباد میں نواز شریف نے پاکستان کے سب سے چھوٹے گراؤنڈ میں جلسہ کیا، میں جلسے میں موجود ہوتا تو نواز شریف کو کہتا چل جھوٹا، نواز شریف اس ملک کی فوج کو تباہ کرنا چاہتے ہیں ،نواز شریف جنرل قمر جاوید باجوہ کا متبادل ڈھونڈ رہے تھے ،ملک کی سیاسی صورت حال 20 دسمبر تک واضح ہو جائے گی ،مارچ میں موجودہ حکومت کک مارچ ہو جائے گی۔ اتوار کے روز نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نواز شریف بھول گئے ہیں کہ انہیں کیوں نکالا گیا، نواز شریف بھول گئے کہ وہ دس سال کا معاہدہ کر کے بیرون ملک فرار ہو گئے تھے ،پھر بھی وہ کہتے ہیں میں ڈرنے والا نہیں ہوں ،شیخ رشید نے کہاکہ نواز شریف کی حالت قابل رحم ہے ، کچھ دنوں بعد نواز شریف کو عوام پتھر مارنا نہ شروع کر دیں ،نواز شریف یہ تاثر دینے کی کوشش کر رہے ہیں کہ ان کے ساتھ زیادتی ہوئی ،نواز شریف عوام کو یہ نہیں بتا رہے کہ ان کے خلاف سپریم کورٹ سے نظر ثانی اپیل کا فیصلہ کیا آیا ہے ،نواز شریف نے ایبٹ آباد کے سب سے چھوٹے گراؤنڈ میں جلسہ کیا، اگر میں ایبٹ آباد میں ہوتا تو زور سے کہتا چل جھوٹا، نواز شریف نے جونیجو کو اتارا جو نواز شریف کے محسن تھے ۔انہوں نے کہا کہ شریف خاندان کو جسٹس عبد القیوم جیسا جج چاہئے ،نواز شریف کسی فوجی جرنیل کو ہتھکڑی لگوانا چاہتے ہیں ،موجودہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو نواز شریف نے خود آرمی چیف بنایا، نواز شریف بعد میں قمر جاوید باجوہ کو ہٹانا چاہتے تھے ،نواز شریف کی آج تک کسی جرنیل سے نہیں بنی ،نواز شریف کوئی جنرل بٹ ڈھونڈ رہے ہیں ،نواز شریف کا ایجنڈا اس ملک کی فوج کو تباہ کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب 1999ء میں مارشل لاء لگا تو قدرت کی طرف سے مجھے پہلے ہی ارشاہ مل گیا تھا میں نے چھ دن پہلے ہی اپنا سامان پیک کر لیا تھا، نواز شریف کو اس وجہ سے مجھ پر شک ہوا کہ مجھے کیسے پہلے پتہ چل گیا۔ نواز شریف ووٹ کے تقدس کی بات کر رہے ہیں ،عمران خان چار سال تک چار حلقوں کی بات کرتے رہے لیکن ان کی نہیں سنی گئی ،خواجہ سعد رفیق آج بھی سٹے آرڈر پرہیں ۔جب انصاف ختم ہو جاتا ہے تو ملک تباہ ہو جاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف لوگوں کوخریدنے کا فن خوب جانتے ہیں ،سی پیک منصوبے کے اصل فیصلے دبئی میں ہوئے تھے ،ادھر صرف دکھاوا ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر پی پی پی اور ایم کیو ایم حلقہ بندیوں کے لئے ترمیم کے لئے ووٹ نہ دیتی تو حکومت کے پاس 228 ارکان نہ ہوتے اور بل نہ پاس ہوتا،بل پاس ہونے کے دن ن لیگ کے صرف 68 ارکان موجود تھے ،ملکی معیشت دم توڑ رہی ہے ،حکومت کے پاس قرضے کی قسط دینے کے لئے پیسے نہیں ہیں ۔آرمی چیف اور وزیر اعظم سعودی عرب جا رہے ہیں، پیسے لینے کے لئے ۔انہوں نے کہا کہ 20 دسمبر تک نواز شریف کے خلاف سب کیسز کے فیصلے آ جائیں گے ،مارچ میں موجودہ حکومت کوئک مارچ ہو جائے گی ،ماڈل ٹاؤن کا فیصلہ بھی جلد آ جائے گا،ماڈل ٹاؤن کا فیصلہ آنے کے بعد جن پولیس اہل کاروں کو شہباز شریف نے باہر بھیج دیا تھا وہ سلطانی گواہ بن جائیں گے ۔اسحاق ڈار بھی سلطانی گواہ بن جائیں گے، اگر اسحاق ڈار ملک واپس آئے تو حدیبیہ کیس میں وہ اپنا پرانا بیان واپس دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ بیس دسمبر تک ملک کی صورت حال واضح ہو جائے گی ۔اب مارشل لاء لگانے والی فوج نہیں رہی ،مشرف دور کے چالیس سے ساٹھ ممبران اسمبلی اگلی حکومت میں بھی شامل ہوں گے ،یہ ممبران پی پی پی کے ساتھ بھی موجود رہے اوراب ن لیگ کے ساتھ موجود ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ختم نبوت کا مسئلہ خود پیدا کیا گیا، یہ سازش تھی ،فیض آباد میں بیٹھے لوگ اس بات پر سچے ہیں کہ دھرنے والوں کو ایمبولینس اور لوگوں کا خیال رکھنا چاہئے ،ختم نبوت قانون کے لئے بڑے برے مولویوں نے سینٹ میں ووٹ دیا، میں نے ختم نبوت قانون میں غلطی کی نشان دہی کی ،سیون اے اورسیون بی میں نے شامل کرایا۔ شیخ رشید نے کہا کہ ڈیرہ اسماعیل خان واقعے کے حوالے سے مجھے خاص علم نہیں ہے ،لوگ آج اپنی مرغی کو خود گولی مار کر الزام دوسرے پر لگا دیتے ہیں ،عمران خان کبھی نا انصافی کا ساتھ نہیں دیں گے۔

loading...