اشاعت کے باوقار 30 سال

ترکی نے نیٹو فوجی مشقوں کا بائیکاٹ کر دیا

ترکی نے نیٹو فوجی مشقوں کا بائیکاٹ کر دیا

انقرہ: ترکی کے بانی اور پہلے صدر مصطفی کمال اتاترک کی توہین کرنے پر ترک حکومت نے نیٹو کی فوجی مشقوں کا بائیکاٹ کر دیا۔ ناروے میں نیٹو کی فوجی مشقوں کے دوران ترکی کے بانی مصطفی کمال اتاترک کی تصویر دشمن کے طور پر لگا کر توہین کی گئی۔ ترکی اس واقعے پر شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے احتجاجا نیٹو کی فوجی مشقوں سے علیحدگی کا فیصلہ کرتے ہوئے مشقوں میں شریک اپنے 40 فوجیوں کو واپس بلا لیا ہے۔ سوشل میڈیا پر ترک صدر رجب طیب اردوان کے نام سے بنے ہوئے ایک جعلی اکانٹ سے بھی نیٹو مخالف پیغامات بھیجے گئے ہیں۔ نیٹو کے جنرل سیکریٹری جینز اسٹولٹن برگ نے معاملے پر معافی مانگتے ہوئے کہا کہ ترکی نیٹو کے فوجی اتحاد کا اہم حصہ ہے اور کمال اتاترک کی تصویر دشمن کے طور پر لگانا انفرادی نوعیت کا عمل ہے جسے نیٹو اتحاد کا مقف نہ سمجھا جائے۔واضح رہے کہ ترک فوج نیٹو اتحاد میں شامل دوسری بڑی فوج ہے۔ ترکی دولتِ اسلامیہ (داعش) کے خلاف اتحاد اور افغانستان میں نیٹو مشن دونوں کا حصہ ہے۔

loading...