اشاعت کے باوقار 30 سال

عدالتی حکم کے باوجود مذہبی جماعتوں کا دھرنا جاری

عدالتی حکم کے باوجود مذہبی جماعتوں کا دھرنا جاری

اسلام آباد: عدالتی حکم کے باوجود وفاقی دارالحکومت میں مذہبی جماعتوں کا دھرنا بدستور جاری ہے۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے مذہبی جماعتوں کو فیض آباد انٹرچینج پر جاری دھرنا ختم کرنے کا حکم دیا تھا تاہم عدالتی حکم کے باوجود مذہبی جماعتوں کا دھرنا جاری ہے۔ فیض آباد انٹرچینج اور اطراف کی سڑکیں ٹریفک کے لئے بند ہیں جس کے باعث شہریوں، سرکاری ملازمین، طلبہ و طالبات کو شدید سفری مشکلات کا سامنا ہے جب کہ فیض آباد اور اطراف کے علاقے میں انٹرنیٹ سروسز بھی معطل ہے۔ جڑواں شہروں کو ملانے والے متبادل راستوں پر ٹریفک کا شدید رش ہے، ٹریفک پولیس ٹریفک کو رواں دواں رکھنے میں ناکام نظر آ رہی ہے۔ دھرنا دینے والے افراد کے رہنماؤں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ مطالبات کی منظوری تک دھرنا ختم نہیں کریں گے۔ دوسری جانب ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے مذہبی جماعت کے سربراہ کو دھرنا ختم کرنے کے لیے خط لکھ دیا۔ خط میں کہا گیا کہ اگر دھرنا ختم نہ کیا گیا تو قانون کے مطابق سخت کارروائی ہو گی۔ واضح رہے کہ مذہبی جماعتوں نے فیض آباد انٹرچینج پر گزشتہ 13 روز سے دھرنا دے رکھا ہے، دھرنے کے شرکا ختم نبوت سے متعلق آئینی شقوں میں ردو بدل کرنے والوں کے خلاف کارروائی اور وزیر قانون زاہد حامد کے استعفیٰ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

loading...