اشاعت کے باوقار 30 سال

ایم کیو ایم پاکستان اور پاک سرزمین پارٹی کا سیاسی اتحاد کا فیصلہ

ایم کیو ایم پاکستان اور پاک سرزمین پارٹی کا سیاسی اتحاد کا فیصلہ

کراچی: متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان اور پاک سر زمین پارٹی (پی ایس پی) نے متحدہ ہونے اور آئندہ انتخابات ایک نام، ایک ہی نشان اور ایک منشور سے لڑنے کا اعلان کر دیا ہے۔ کراچی پریس کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے فاروق ستار نے کہا کہ ’ہم یہ سمجھتے ہیں کہ ایک سیاسی اتحاد کراچی، سندھ اور پاکستان کی ضرورت ہے اور وقت کی بھی ضرورت ہے۔ اس اتحاد کا نام کیا ہو گا یہ آئندہ ہماری میٹنگز میں فرہم ورک کو طے کریں گے اور مقاصد کو بیانیہ دیں گے۔‘ فاروق ستار کا کہنا تھا کہ آج کراچی بہت سارے مسائل میں گھرا ہوا ہے بالخصوص کراچی اور سندھ کے شہروں میں سیاست کرنے والی جماعتوں نے محسوس کیا کہ ہمیں صرف سندھ کے شہری علاقوں کے نہیں بلکہ دیگر شہروں کے مسائل بھی حل کرنے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ آج کی پریس کانفرنس کا مقصد کراچی اور سندھ کے ووٹ بینک کو تقسیم سے روکنا ہے، پریس کانفرنس کا مقصد عدم تشدد کی سیاست کو کامیاب بنانا بھی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے فیصلہ کیا کہ ہم مل جل کر کراچی کے عوام کے مسائل حل کریں اور متحدہ کوشش کریں اور کراچی اور سندھ کے لیے ایک بہترین سیاسی اتحاد قائم کیا جائے۔ فاروق ستار نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان اور پی ایس پی نے ایک ہونے کا فیصلہ کر لیا ہے، اگلے انتخابات کے لیے ایک نام، ایک منشور اور ایک حکمت عملی طے کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ایک سیاسی اتحاد پاکستان اور بالخصوص سندھ کی ضرورت ہے، اس اتحاد کا نام اور مقاصد کیا ہوں گے اس حوالے سے دونوں جماعتیں مل کر آئندہ چند دنوں میں فیصلہ کریں گی۔مصطفیٰ کمال نے کہا کہ میں فاروق بھائی کی باتوں کی توثیق کرتا ہوں، ایک منشور اور ایک انتخابی نشان کے لیے پاکستان کے لیے اپنی جدو جہد کا اعادہ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فاروق بھائی سے آیندہ الیکشن میں تعاون پر 6 ماہ سے سلسلہ چل رہا ہے۔مصطفی کمال نے کہا کہ ایم کیو ایم الطاف حسین کی تھی، ہے اور رہے گی اور اگر پی ایس پی کے نام پر سیاست کی جائے تو ہو سکتا ہے کہ فاروق ستار اس پر اعتراض کریں اس لیے اب ہماری جو بھی شناخت ہو گی وہ ایم کیو ایم نہیں ہو گی۔ واضح رہے کہ ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ کے پی ایس پی میں شامل ہونے کے بعد ایم کیو ایم پاکستان اور پاک سر زمین پارٹی کے رہنماؤں میں بیان بازی کا سلسلہ تیز ہو گیا تھا جب کہ گزشتہ روز پی ایس پی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے کہا تھا کہ اعلانیہ کہہ رہے ہیں ایم کیوایم کو دفن کرنا ہے۔ قبل ازیں پارٹی کے جنرل ورکرز اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو میں فاروق ستار کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم قائم و دائم ہے اور پارٹی کا نام تبدیل نہیں کیا جا رہا۔ انہوں نے کہا کہ کچھ غیر معمولی اقدامات کرنے پڑتے ہیں، ہمیں آنے والی نسلوں کو مسائل سے نجات دلانی ہے۔ فاروق ستار کا کہنا تھا کہ ایسے فیصلے کریں کہ جس سے سیاسی بصیرت کا اظہار ہو۔ سربراہ ایم کیو ایم پاکستان نے کہا کہ جس جسد خاکی کو آپ نے دفن کرنے کی بات کی تھی، آج آپ کو اسی کے سہارے کی ضرورت پڑ رہی ہے۔ فاروق ستار نے کہا کہ اب تشدد اور تصادم کے ذریعے سے ہم آگے نہیں بڑھ سکتے، اب عملی کام کرنے ہوں گے انہوں نے کہا کہ سندھ کے شہری عوام نے فیصلہ کا مینڈیٹ دے دیا ہے جبکہ کارکنان نے پہلے بھی مینڈیٹ دیا تھا اور اب بھی مینڈیٹ دے دیا ہے۔

loading...