اشاعت کے باوقار 30 سال

نواز شریف نے ثابت کر دیا کہ انہیں دولت سے پیار ہے

نواز شریف نے ثابت کر دیا کہ انہیں دولت سے پیار ہے

چترال: پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف نے اپنی روئیے سے ثابت کر دیا ہے کہ انہیں ملک سے نہیں بلکہ دولت سے پیار ہے اور جب عدالت نے پانامہ لیکس کے انکشافات کے بعد لندن میں خریدے گئے چار محلات کے لئے ذرائع کے بارے میں پوچھا تو اس نے عدالت کے ساتھ قوم اور پارلیمنٹ کو بھی جھوٹ بولا اور نااہل بن گئے اور آج ان کی جھوٹ کی حقیقت ایک ایک ہو کر عیاں ہو رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کی عدلیہ نے پہلی مرتبہ قوم کو امید دی ہے کہ اب اس ملک میں طاقتور کا بھی احتساب ہو گا جبکہ اس سے پہلے صرف غریب لوگ گرفتار ہوتے اور طاقتور اسمبلیوں میں پہنچ جاتے اور یہ ایک مسلمہ حقیقت ہے کہ جب تک ملک میں عدالت کا نظام درست ہو تو قوم جڑی رہتی ہے اور اتنی مضبوط ہوتی ہے کہ ایٹم بم بھی اسے تباہ نہیں کر سکتی۔ بدھ کے روز پولو گراونڈ چترال میں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے ۔ انہوں نے کہا کہ اب پہلی بار ان کی جدوجہد کے نتیجے میں بڑے بڑے لوگ کرپشن میں دھر لئے گئے ہیں اور کوئی کرپٹ سیاستدان بچ نہیں نکلے گا اور اگلے سال کے انتخابات میں یہ قوم ان کرپٹ حکمرانوں کے تابوت میں آخری کیل ٹھونک دے گی۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم، ماحولیات، مالیات اور انتظامی اصلاحات وہ چار نکات ہوں گے جن پر پی ٹی آئی کی اگلی حکومت بھر پور توجہ دے گی جن کے ساتھ ملک کی ترقی و حوشحالی کا راز وابستہ ہے اور اب تک کسی حکومت نے ان پر توجہ نہیں دی۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کے بغیر کوئی ملک ترقی نہیں کر سکتی اور تمام ترقی یافتہ ممالک نے سب سے پہلے اپنی تعلیمی نظام میں انقلابی تبدیلی لے آئی اور ماحولیات کو بھی صحیح خطوط پر استوار کئے بغیر کوئی ترقی ممکن نہیں ہے جوکہ ہمارے ظالم اور کرپٹ حکمرانوں کے ہاتھوں تباہ ہو کر رہ گئی اور یہ بات ریکارڈ پر ہے کہ اس صوبے میں اے این پی اور ایم ایم اے کے دور حکومتوں میں مجموعی طور پر 200 ارب روپے مالیت کے جنگل غیر قانونی طور پر کاٹی گئی تھی جس کے ازالے کے لئے ہم نے بلین ٹری سونامی شروع کی جو کہ کامیابی سے جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو چلانے کے لئے پیسہ اکھٹا کرنے کا ایک مربوط نظام اس ملک کو دے دیں گے جس میں غریبوں سے ٹیکس لے کر ان کو غریب تر کرنے کی بجائے امیروں سے ٹیکس لے کر قومی خزانے کے بھر دیں گے جبکہ ہم ملک کو پچاس سال پہلے کا وہ سول سروس دیں گے جو پوری ایشیاء میں مشہور تھا اور اس میں ایسی ریفارمز لے آئیں گے کہ یہ قوم کی امنگوں کا آئینہ دار اور ان کے مسائل کو حل کرنے والا ہو گا۔ پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان نے کہا کہ آئندہ کے لئے ضلع ناظم کا انتخاب براہ راست ہو گا تاکہ ایک طرف ہارس ٹریڈنگ کا خاتمہ ہو تو دوسری طرف ہر پارٹی بہتریں صلاحیتوں کے مالک افراد کو سامنے لائیں جوکہ ضلع کا نظم ونسق چلانے کے قابل اور اہل ہو جبکہ موجودہ نظام میں بالواسطہ انتخاب کے نتیجے میں بہتری صلاحیتوں کا مالک سامنے نہیں آتا اور یہ اس سسٹم کی خرابی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ کے لئے ترقیاتی فنڈز ایم این اے اور ایم پی اے کے ذریعے خرچ ہونے کی بجائے ضلع ناظم کے ہاتھوں خرچ ہوں گے اور 1985ء سے پہلے یہی نظام رائج تھا جب ضیاء الحق نے ممبران اسمبلی کے ذریعے ترقیاتی کام کرنے سلسلہ شروع کیا جس سے سیاست میں خرابی کا طوفان برپا ہوا۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ ترقیاتی فنڈز پر نظر جماتے ہوئے ہماری پارٹی میں ٹکٹ کے طلبگار ہیں، ان کو یہیں سے واپس جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حال ہی میں وزیر اعظم خاقان عباسی نے پارٹی کے ایم این ایز کو 94 ارب روپے کی خطیر رقم جاری کر دی ہے تاکہ وہ کچھ اپنی جیبوں میں ڈال دیں اور کچھ تو ترقیاتی کاموں کے بہانے سیاسی رشوت دے سکیں۔ انہوں نے چترال کو دو اضلاع میں تقسیم کر کے اپر چترال کا ضلع بنانے پر چترال کے عوام کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ چترال اور بلتستان کے لوگ انتہائی مہذب اور نفیس ہیں اور جو ڈسپلن ان لوگوں میں پائی جاتی ہے، وہ ملک کے دیگر حصوں کے لئے مثال ہیں۔ اس سے قبل وہ کلین اینڈ گرین چترال کے نام سے ویلج ناظمیں کے شروع کردہ پراجیکٹ کا افتتاح کیا جس میں ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن کی معاونت شامل ہے۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے ساتھ پراجیکٹ کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ چترال کے ویلج ناظمین کی اس کاوش کو نہ صرف خیبر پختونخوا میں بلکہ پاکستان بھر میں ماڈل کے طور پر پیش کیا جائے گا۔

loading...