اشاعت کے باوقار 30 سال

حلقہ بندیوں کے فیصلے پر کوئی یو ٹرن نہیں لیا

حلقہ بندیوں کے فیصلے پر کوئی یو ٹرن نہیں لیا

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ حلقہ بندیوں کے فیصلے پر کوئی یو ٹرن نہیں لیا، مردم شماری پر سوالیہ نشان موجود ہے لیکن انتخابات مقررہ وقت پر ہونے چاہییں۔ موجودہ وزیر اعظم کا ایک نا اہل شخص کو وزیر اعظم کہنا سال کا سب سے بڑا مذاق ہے اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ پنجاب اور خیبر پختونخوا سے لوگ سندھ میں آباد ہو رہے ہیں اور مردم شماری میں سندھ کی آبادی دیگر صوبوں کے مقابلے میں کم دکھائی گئی۔ خورشید شاہ نے کہا کہ مردم شماری کے اعداد و شمار پر پیپلز پارٹی سمیت دیگر کو بھی تحفظات ہیں تاہم آئندہ الیکشن 1988 کی مردم شماری پر کرانے میں کوئی ہرج نہیں۔ اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ 2013 کے عام انتخابات میں مسلم لیگ (ن) نے 1998 کی مردم شماری پر کامیابی حاصل کی اس لئے آئندہ انتخابات اسی مردم شماری کی بنیاد پر کرانے میں انہیں تحفظات نہیں ہونے چاہییں۔ ان کا کہنا تھا کہ قبل از وقت انتخابات کے حامی نہیں لیکن دعاگو ہوں کہ 2018 کے جولائی یا اگست میں الیکشن ہونے چاہییں۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف کے حوالے سے خورشید شاہ نے کہا کہ نواز شریف کے قریبی افراد ان کے خلاف سازش کر رہے ہیں اور وہ جانتے ہیں کہ ان کا دشمن کون ہے، اگر وہ موجودہ حالات سے بھاگے تو تباہ ہو جائیں گے۔ ایک سوال پر خورشید شاہ نے کہا کہ یہ سال کا سب سے بڑا مذاق ہے کہ موجودہ وزیر اعظم ایک نااہل شخص کو وزیر اعظم کہتے ہیں۔

loading...