اشاعت کے باوقار 30 سال

ایم کیو ایم پاکستان کا دوبارہ مردم شماری کا مطالبہ

ایم کیو ایم پاکستان کا دوبارہ مردم شماری کا مطالبہ

کراچی: ایم کیو ایم پاکستان نے دوبارہ مردم شماری کا مطالبہ کر دیا۔ سربراہ ایم کیو ایم پاکستان فاروق ستار نے کہا ہے کہ ہماری آبادی کم کر کے 2018 کے انتخابات سے پہلے دھاندلی کی گئی، ایک ایک شہری کی گنتی ہوتی، ہمارا مطالبہ ہے مردم شماری دوبارہ سے کرائی جائے، ڈیڑھ کروڑ آبادی کم کر کے 80 لاکھ ہمارے ووٹر حذف کر دیے گئے، کراچی میں لیاقت آباد میں ایم کیو ایم کی جانب سے منعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کراچی کی آبادی کو ڈیڑھ کروڑ گنا گیا باقی دیڑھ کروڑ کو لاپتا کر دیا گیا، دھاندلی شدہ مردم شماری کو نامنظور کرتے ہیں، مردم شماری والوں کا کام تھا مرد خواتین کو گنتے، ایسا لگتا ہے مردم شماری کے بجائے آدم خوری کی گئی، انہوں نے کہا کہ ایک سال پہلے ہم نے ایک وعدہ، ایک فیصلہ اور ایک تاریخ رقم کی تھی، ہم نے وعدہ کیا تھا ایک سال میں ایم کیو ایم کو پیروں پر کھڑا کریں گے۔ میئر کراچی وسیم اختر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس قوم کو کسی اور کے لیے کیوں تقسیم کر رہے ہو، فاروق ستار کی قیادت میں پارٹی متحد رکھنے کے لیے ہم یہاں ہیں، ہماری فوج امن کے لیے قربانیاں دے رہی ہے، وسیم اختر نے کہا کہ صحیح مردم شماری قوم کے لیے ضروری ہے، کسی کے جانے سے کوئی کمی نہیں آئے گی، دبئی سے کوئی فون آئے تو اسے جواب دو، گھبرانے والی کوئی بات نہیں ہے، یہ پتنگ، یہ نام یہ جھنڈا ہم سے کوئی نہیں چھین سکتا، میرے ساتھیوں نے اس نام کے لیے قبرستان بھرے ہیں، کچھ لوگ ہمارے کیمپس پر غنڈے بدمعاش بھیجتے ہیں، میں ایسے لوگوں کو کیا بولوں؟ کیوں محنت کی جا رہی ہے ان گھوڑوں پر؟ انہوں نے کہا کہ فون کرتے ہیں آ جاؤ ورنہ تمہیں راستے سے اٹھا لیں گے، ساتھیوں کوئی کال آئے تو تگڑا جواب دو، اصل گروپ یہ ہے دوسرا گروپ نقلی ہے، کل سے نئے جوش و جذبے کے ساتھ جدوجہد شروع کریں گے، اس اسٹیج سے کوئی جاتا ہے تو جائے قوم کو پرواہ نہیں۔

loading...