اشاعت کے باوقار 30 سال

مسلم لیگ (ن) کی سیاسی قبر بن چکی

مسلم لیگ (ن) کی سیاسی قبر بن چکی

خانیوال: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ (ن) لیگ کی سیاسی قبر بن چکی، نواز شریف مائنس ون ہو چکے، انہیں سپریم کورٹ کے پانچ ججز نے نااہل قرار دیا ہے، ن لیگ نے آئندہ الیکشن جیتنے کے لئے اراکین اسمبلی میں 94 ارب روپے بانٹ دیے ہیں، خاقان عباسی اتنے کمزور وزیر اعظم ہیں کہ شوکت عزیز کا بھی ریکارڈ توڑ دیا ہے، پی ٹی آئی حکومت میں آ کر آلودگی کے خلاف جہاد شروع کرے گی، پاکستان کے تمام ادارے خسارے میں ہیں ہم پاکستانی قوم کو ایک باوقار قوم بنائیں گے، فضل الرحمن ہر حکومت کے ساتھ منسلک ہو جاتا ہے، ہم ملک تبدیل کریں گے، خوشحالی آئے گی، نوجوانوں کو روزگار ملے گا، دبئی کے لوگ پاکستان آئیں گے نوکریاں ڈھونڈنے کے لئے، نواز شریف فوج اور سپریم کورٹ کو نشانہ بنا رہے ہیں کہتے ہیں میرے خلاف سازش ہوئی ہے، پاکستان اللہ کی طرف سے تحفہ ہے جو خوبصورتی پاکستان میں ہے وہ دنیا میں کہیں نہیں ہے، پاکستان کو ایسا ملک بنائیں گے جس کے لئے قائد اعظم نے انتھک جدوجہد کی، قائد نہ ہوتے تو ہمارا حال بھی انڈیا میں ویسا ہی ہوتا جو وہاں کے مسلمانوں کا ہو رہا ہے۔ ہم اقلیتی برادری کے ساتھ ہندوستان جیسا سلوک نہیں کرتے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار ہفتہ کی رات سپورٹس سٹیڈیم خانیوال میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ خاقان عباسی نے الیکشن جیتنے کے لئے ایم این ایز کو 94 ارب روپے بانٹے ہیں لیکن وہ ڈرپوک ترین وزیر اعظم ہیں اور ایک کرپٹ انسان کے قدموں پر گرے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کہتے ہیں کہ ان کے خلاف سازش ہو گئی ہے اب تک نواز شریف خلاف فیصلہ آنے سے پہلے ہی بریف کیس بھجوا کر یا ڈرا دھمکا کر فیصلہ حق میں لیا جاتا تھا۔ سپریم کورٹ نے درست فیصلہ کیا ہے۔ فوج نے ن لیگ کو گود میں پالا تھا نواز شریف کو سیاست ہی نہیں آتی، نواز شریف اب تک بیساکھیوں کے سہارے الیکشن جیتتے آئے ہیں، اب انصاف کو نواز شریف سازش قرار دیتے ہیں لیکن یہ اللہ کی رحمت ہے، نواز شریف مائنس ون ہو چکے ہیں ن لیگ دفن ہو چکی ہے اس پر اب پودے بھی اگنا شروع ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم ملک تبدیل کریں گے، خوشحالی آئے گی، نوجوانوں کو روزگار ملے گا، دبئی کے لوگ پاکستان آئیں گے نوکریاں ڈھونڈنے کش لئے۔ انہوں نے کہا کہ چائنا کی ترقی کرنے کی سب سے بڑی وجہ کہ انہوں نے امیر کو مزید امیر کرنے کی بجائے غریب طبقے کو اوپر اٹھایا، چھوٹے کسانوں کی مدد کی۔ پاکستان کا کسان قرضوں میں ڈوبا ہوا ہے اسے کھاد مہنگی ملتی ہے، فصلوں کی قیمت نہیں ملتی ہے، چائنہ نے ترقی کی اب پوری دنیا کے سرمایہ کار وہاں سرمایہ کاری کرتے ہیں، ہم چائنہ کی تقلید کرتے ہوئے غریبوں کو اوپر لے کر آئیں گے، ملک کا سرمایہ بیرون ملک پڑا ہے اسے واپس لایا جائے تو ملک میں خوشحالی آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کرپشن کی وجہ سے بھی سرمایہ کار پاکستان نہیں آتے، ہم کرپشن کو ختم کریں گے، گورننس سسٹم ٹھیک کریں گے، پاکستان غریب نہیں ہے اس کو صرف مضبوط اداروں کی ضرورت ہے، میرٹ کی بالادستی چاہیے، ہم نے کے پی کے میں سیاسی مداخلت ختم کی، بینک آف خیبر سمیت دیگر اداروں کو مضبوط کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان، ریلوے، اسٹیل مل سمیت تمام ادارے خسارے میں ہیں، ٹیکسوں کا بوجھ عوام پر ڈالا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ہر سال لوگ شوکت خانم کو سب سے زیادہ پیسہ دیتے ہیں، ہم اقتدار میں آ کر آٹھ ہزار ارب روپے ملک سے ٹیکس اکٹھا کریں گے، ہمیں قرضہ لینے کی ضرورت نہیں پڑے گی، پنجاب پولیس کو درست کریں گے ہم کپڑے نہیں بدلیں گے اسے عملی طور پر ٹھیک کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی پولیس کی عزت کریں گے اس سے ڈریں گے نہیں، ہم انتقامی کاروائی نہیں کریں گے، کوئی وزیر تھانیدار نہیں لگوائے گا، میرٹ ہو گا تاکہ عوام کی جان و مال کی حفاظت ہو۔ انہوں نے کہا پاکستانی کو ایک باوقار قوم بنائیں گے ، ہم پہلے اپنی عزت خود کریں گے پھر دنیا ہماری عزت کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ قوم بکنے والی نہیں ہے 94 ارب روپے اراکین اسمبلی میں بانٹ دیے گئے ہیں تاکہ الیکشن جیتا جا سکے لیکن یہ قوم بکنے والی نہیں ہے۔ اگلے الیکشن میں ن لیگ ہارے گی، نواز شریف مائنس ون ہو گئے ہیں آپ کو سپریم کورٹ کے پانچ ججز نے نااہل قرار دے دیا ہے۔ نواز شریف فوج اور سپریم کورٹ کو نشانہ بنا رہے ہیں اور کہتے ہیں کہ میرے خلاف سازش ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اللہ کی طرف سے تحفہ ہے جو خوبصورتی پاکستان میں ہے وہ دنیا میں کہیں نہیں ہے، خوبصورت پہاڑ، دریا، بارہ موسم عطاء کیے ہیں، دنیا کی زرخیز ترین زمین، کوئلے کے ذخائر، خوبصورت علاقے عطاء کیے۔ چار نئی وادیاں ڈھونڈی ہیں یہ وادیاں عوام کش لئے کھولیں گے ایسی وادیاں یورپ میں بھی نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے سب نعمتیں عطاء کر دیں لیکن ہم نے اور حکومتوں نے اپنا فرض ادا نہیں کیا۔ انہوں نے کہ آج کل دھند نہیں آلودگی ہے اس آلودگی سے سالانہ تین لاکھ لوگ پاکستان میں مرتے ہیں کسی نے آلودگی کے متعلق نہیں سوچا، اللہ کی زمین پر گندگی پھیلائی جا رہی ہے اس آلودگی کے اثرات اور صحت پر بھی پڑیں گے۔ پی ٹی آئی پہلی جماعت ہو گی جو کہ آلودگی کے خاتمے کے لئے کام کرے گی۔ ہم نے ایک ارب اٹھارہ کروڑ درخت لگائے۔ انہوں نے کہا کہ خانیوال کا جلسہ دیکھ کر یقین ہو گیا ہے کہ عوام نے فیصلہ کر لیا ہے تیس سال سے قابض حکمران جھوٹے وعدے کرتے رہے عوام کو مقروض کر دیا شکر ہے آج عوام جاگ گئی ہے۔ عمران خان نے کہا کہ خانیوال کی عوام کے جنون، اور شعور کو دیکھ کر اللہ کا شکر ادا کرتا ہوں، میں وہ پاکستانی ہوں جسے اللہ تعالیٰ بہت سی کامیابیاں دیں، ہندوستان میں جا کر کرکٹ کے میدان میں ہرایا، انگلینڈ کو اس کی سرزمین پر ہرایا، انڈیا میں نہرو کپ جیتا، ورلڈ کپ جیتا، عوام کے چہروں پر خوشی دیکھی اس پر اللہ کا شکر ادا کیا، شوکت خانم کا قیام بہت مشکل تھا یہ خواب پورا ہوا اللہ کا شکر ادا کیا، یہ ملک اللہ کی طرف سے تحفہ تھا یہ تباہی کی طرف جا رہا ہے، باریاں لینے والے حکمران آئے، ملک کو نیچے جاتے دیکھا۔ پی آئی اے کا نیویارک کا روٹ بند کر دیا گیا یہ دنیا کی نمبر ون ائیر لائن تھی، ملک ترقی کی جانب گامزن تھا مجرموں نے آ کر ملک پر قبضہ کر لیا، حالات بگڑ رہے ہیں، عوام پس رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک پر کرپٹ مافیا قابض ہے جن کی کرپشن کے باعث امیر امیر تر اور غریب غریب سے غریب تر ہو رہا ہے، کرپٹ مافیا عوام کے حقوق کا نعرہ لگا کر ووٹ حاصل کرتا ہے اور اقتدار میں آ کر کرپشن کی بھرمار کر کے بیرون ملک جائیدادیں بنانے میں مصروف ہو جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت میں شریف برادران کے درباری بیٹھے ہیں جہاں سے عوام کا پیسہ لوٹنے والوں کو چالیس چالیس گاڑیوں کو پروٹوکول دیا جاتا ہے دنیا کی کس جمہوریت میں ایسا ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شریف برادران ملک پر تیس برس سے حکومت کر رہے ہیں لیکن ان کو کھانسی بھی ہو تو علاج کے لئے باہر جاتے ہیں، ملک میں غذائی قلت سے بچے مر رہے ہیں 45 فیصد بچے ناقص خوراک کی وجہ سے جسمانی طور پر صحتمند نہیں ہوتے، ہسپتالوں میں مریضوں کو بیڈ دستیاب نہیں ہے، ہسپتالوں میں جگہ نہ ہونے پر سڑکوں پر بچے پیدا ہو رہے ہیں، غذائی قلت اور ناقص پانی کی بدولت جتنے بچے یہاں مر جاتے ہیں دنیا میں کہیں نہیں مرتے ان لوگوں نے تیس برسوں میں ایک ہسپتال بھی ایسا نہیں بنایا جہاں یہ اپنا علاج ہی کروا سکیں۔ انہوں نے کہا پاکستان کو ایسا ملک بنائیں گے جس کے لئے قائد اعظم نے انتھک جدوجہد کی، قائد نہ ہوتے تو ہمارا حال بھی انڈیا میں ویسا ہی ہوتا جو وہاں کے مسلمانوں کا ہو رہا ہے۔ ہم اقلیتی برادری کے ساتھ ہندوستان جیسا سلوک نہیں کرتے ہیں۔

loading...