اشاعت کے باوقار 30 سال

حقیقی جمہوریت میں قانون کی بالادستی ہوتی ہے

حقیقی جمہوریت میں قانون کی بالادستی ہوتی ہے

کوٹ ادو: پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے کہا ہے کہ حقیقی جمہوریت وہ ہوتی ہے جہاں ملک کا سربراہ عوام کو جوابدہ ہوتا ہے، وزیر اعظم پارلیمنٹ کو جوابدہ ہوتا ہے لیکن نواز شریف نے جھوٹ بولا اور ہمیں جواب نہیں دیا، ملک میں ایک چھوٹی سی کرپٹ مافیا قابض ہے جو امیر اور عوام غریب ہو رہی ہے، کرپٹ مافیا عوام کے حقوق کے نام پر ووٹ لیتی ہے اور اپنے بچوں کو بیرون ملک جائیدادیں بنا کر دیتی ہے۔ جمعہ کے روز کوٹ ادو میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ روٹی کپڑا اور مکان اور پاکستان کو ایشین ٹائیگر بنانے کے نام پر ووٹ لیے جاتے ہیں، ملک میں ایک چھوٹی سی کرپٹ مافیا قابض ہے جو امیر اور عوام غریب ہو رہی ہے، کرپٹ مافیا عوام کے حقوق کے نام پر ووٹ لیتی ہے اور اپنے بچوں کو بیرون ملک جائیدادیں بنا کر دیتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کہ جب قوم میں شعور آ جاتا ہے تو وہ اپنے فیصلے سوچ سمجھ کر کرتی ہے اور ملک میں حقیقی جمہوریت آ جاتی ہے، حقیقی جمہوریت وہ ہوتی ہے جس میں ملک کا سربراہ عوام کو جوابدہ ہوتا ہے، وزیر اعظم پارلیمنٹ کو جوابدہ ہوتا ہے لیکن نواز شریف نے جھوٹ بولا اور ہمیں جواب نہیں دیا۔ چیرمین تحریک انصاف نے کہا کہ اسپیکر نے نواز شریف کے خلاف ریفرنس نہیں بھیجا کیوں کہ وہ ان کے گھر کا ملازم ہے، کرپشن کیسز کے خلاف پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں گئے تو سارے محکموں نے ہاتھ کھڑے کر دیئے۔ پاکستان میں سب سے زیادہ بچے گندہ پانی پینے سے مر جاتے ہیں، یہاں اسپتال میں ایک بیڈ پر 4 مریض ہیں، میرا علاج پاکستان میں شوکت خانم اسپتال میں ہوا، یہ علاج کے لیے باہر چلے جاتے ہیں، ملک میں غذائی قلت کے باعث بچے مر رہے ہیں، سڑک پر بچے پیدا ہو رہے ہیں کیوں کہ اسپتالوں میں جگہ نہیں، چھوٹی سی کرپٹ مافیا بار بار باریاں لے کر عوام کا پیسا چوری کرتی ہے، قوم کے پیسے سے باہر ممالک میں محلات بنائے جاتے ہیں، دین کے نام پر لوگوں سے ووٹ لیے جاتے ہیں، روٹی کپڑا اور مکان کے نام پر ووٹ لیے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خواجہ آصف کہتے تھے میاں صاحب فکر نہ کریں قوم جلدی بھول جائے گی، جب قوم میں شعور آ جاتا ہے تو پھر وہ اپنے فیصلے سوچ سمجھ کر کرتی ہے، جب قوم سوچ سمجھ کر ووٹ دینے کا فیصلہ کرے تو حقیقی جمہوریت آتی ہے، اگر ہم نے ووٹ کا صحیح استعمال کیا تو ملک بنا سکتے ہیں، اگر ہم نے ووٹ کا ٹھیک استعمال کیا تو ملک خوشحال ہو سکتا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ ان لوگوں کی جائیدادیں باہر ہیں عیدیں بھی باہر مناتے ہیں، نواز شریف کے بچے کہتے ہیں کہ وہ برطانوی شہری ہیں پاکستان نہیں آئیں گے، اگر حقیقی جمہوریت ہوتی تو وزیر اعظم پارلیمنٹ میں جواب دیتے، ہم نے وزیر اعظم کے خلاف اسپیکر کو ریفرنس بھیجنے کا کہا انھوں نے نہیں بھیجا، پارلیمنٹ میں ہاتھ اٹھا کر قانون پاس کیا گیا کہ مجرم سیاسی جماعت کا سربراہ ہو سکتا ہے، پارلیمنٹ عوام کے پیسے چوری کرنے والوں کی مدد کر رہی ہے، پارلیمنٹ نے وزیر اعظم سے جواب طلب نہیں کیا تو ہمیں سپریم کورٹ جانا پڑا، حقیقی جمہوریت میں قانون کی بالادستی ہوتی ہے سب برابر ہوتے ہیں۔ عمران خان نے مزید کہا کہ دنیا کی کونسی جمہوریت میں ایسا ہوتا ہے کہ عوام کے پیسے سے مجرم کو پروٹوکول ملے، کرپشن کے الزام میں عدالت جانے والوں کو 40 گاڑیوں کا پروٹوکول دیا جا رہا ہے، جمہوریت میں قانون کی بالادستی ہوتی ہے بادشاہت میں نہیں، ان لوگوں نے ثابت کر دیا یہ پارلیمنٹ عوام کی نہیں کرپٹ مافیا کی حفاظت کر رہی ہے، پارلیمنٹ نے ہاتھ کھڑے کر کے قانون پاس کیا کہ مجرم پارٹی کا سربراہ ہو سکتا ہے۔

loading...