اشاعت کے باوقار 30 سال

نواز شریف کرپشن بچانے کے لئے عدلیہ اور فوج پر حملے کر رہے ہیں

نواز شریف کرپشن بچانے کے لئے عدلیہ اور فوج پر حملے کر رہے ہیں

اوچ شریف؍ بہاولپور: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف کرپشن بچانے کے لئے عدلیہ اور فوج پر حملے کر رہے ہیں۔ کرپشن ملک کو تباہ کر رہی ہے کسان خوشحال ہو گا تو ملک میں خوشحالی آئے گی کسان لندن میں فلیٹ نہیں بناتا ملک میں پیسہ لگاتا ہے۔ دبئی میں چوری کر کے لے جائے گئے 800 ارب پاکستان میں لگتے تو نوجوانوں کو نوکریاں مل جاتیں۔ عوام اس پارٹی کو ووٹ نہ دیں جس کے سربراہ کا پیسہ ملک سے باہر ہو ۔ اوچ شریف میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ نومبر میں پنجاب میں اس قسم کی دھند کبھی نیں آئی۔ اللہ کی طرف سے خطرے کی گھنٹی بج چکی ہے۔ ماں باپ بچوں کو سکول نہیں بھیج پا رہے۔ تین سالوں میں کے پی کے میں چھانگا مانگا سے 40 گناہ بڑے جنگل لگائے۔ ایک ارب سے زائد درخت لگائے ہیں۔ بھارت میں حکومت اپنے کسانوں کی مدد کرتی ہے۔ بدقسمتی سے ہماری حکومت بھارتی کسانوں کی مدد کرتی ہے۔ سرحد کے اس طرف حکومت کسانوں کو سستی کھالیں دیتی ہے۔ کسان اپنے پیشے سے لندن میں فلیٹ نہیں لیتا وہ اپنی زمین پر ہی خرچ کرتے ہیں۔ 30 سالوں میں چین نے 70 کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالا۔ غربت ختم کرنے کے لئے چین نے کسانوں پر خرچ کیا۔ مگر شہباز شریف کو دیکھیں غریب عوام کے 200 ارب روپے اورینج ٹرین پر لگا دیئے ہیں۔ 60 سے 70 ارب روپے اگر کسانوں پر لگا دیئے جائیں تو ملک خوشحال ہو جائے گا۔ نواز شریف اور آصف زرداری سے قبل عوام پر 35 ہزار کا قرض تھا مگر ایک لاکھ سے زائد کی مقروض ہو چکی ہے۔ مولانا فضل الرحمن اسفند یار ولی، محمود خان اچکزئی نواز شریف کیس اتھ مل جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے اسمبلی اور قوم سو جھوٹ بولا۔ شریف کورٹ نے نواز شریف اور شریف خاندان کو جے آئی ٹی کے سامنے اپنے اثاثوں سے متعلق ثبوت فراہم کرنے کا کہا مگر وہ ناکام رہے اور پھر نا اہل ہونے کے بعد عدلیہ اور فوج پر حملہ شروع کر دیا اور کہتا ہے کہ مجھے کیوں نکالا۔ ملک کا یپسہ لوٹنے والوں کو ملک واپسی پر پروٹوکول دیا جا رہا ہے۔ ملک میں جھوٹا چور پکڑا جاتا ہے۔ اور بڑے چور کو 40 گاڑیوں کے ذریعے پروٹوکول فراہم کیا جاتا ہے اور عوام کو پیغام دیا جا رہا ہے چوری کرنی ہے تو بڑا ڈاکا مارو پاکستان میں امیر کے لئے ایک اور غریبوں کے لئے دوسرا قانون ہے۔ ملک کے 300 منی لانڈرنگ کر کے گئے۔ بدقسمتی سے ملک کے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی ایک قومی مجرم کو تحفظ فراہم کیا اور پروٹوکول دے دیتے ہیں۔ پاکستانیوں نے دبئی میں 800 ارب روپے کی جائیدادیں خریدی ہوئی ہیں اور غریب لوگ اپنے گھر والوں کا پیٹ پالنے کے لئے اپنے بچوں اور گھر والوں کو چھوڑ کر دبئی میں روزگار کی تلاش میں جاتے ہیں۔ عوام کو ایسی کسی لیڈر کو ووٹ نہیں دینا چاہیئے جس کی جائیداد ملک سے باہر ہو۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں شوگر ملز کے بند ہونے اور کسانوں کے نقصان پر لاہور ہائی کورٹ نوٹس لے اور شہباز شریف کسانوں کا نقصان پورا کریں۔ ہائی کورٹ کو شریف خاندان کی شوگر ملیں بند کرنی چاہییں۔

loading...