اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

جونز ٹاؤن میں اجتماعی خود کشی

افغان صدر اشرف غنی کا دورہ پاکستان کا امکان

افغان صدر اشرف غنی کا دورہ پاکستان کا امکان

کابل: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی جانب سے حالیہ دورہ افغانستان کے دوران دی گئی دعوت کے بعد افغان صدر اشرف غنی نے پاکستان کے دورے پر غور شروع کر دیا۔ پاکستان میں تعینات افغان سفیر ڈاکٹر عمر زاخیل وال نے بتایا کہ گذشتہ ہفتے جنرل قمر جاوید باجوہ نے ایک ملاقات کے دوران اشرف غنی کو پاکستان آنے کی دعوت دی تھی۔ افغان میڈیا کے مطابق افغان صدر اشرف غنی نے پاکستان کے آرمی چیف کی دعوت قبول کر لی ہے۔ تاہم رپورٹ میں کہا گیا کہ ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ دورہ کب تک ممکن ہے کیونکہ افغان حکومت نے اس معاملے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔ افغان میڈیا کے مطابق اشرف غنی نے پاکستان پر علاقائی امن و سلامتی کے سلسلے میں مدد کے لیے ریاستوں کے درمیان مذاکرات کی اہمیت پر زور دیا تھا۔ رپورٹ کے مطابق کابل میں ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس کے دوران افغان صدر نے طالبان پر بھی 'امن عمل میں شمولیت' پر زور دیا۔ خامہ پریس کی رپورٹ میں اشرف غنی کے حوالے سے بتایا گیا، 'حزب اسلامی کے ساتھ کامیاب امن معاہدے سے طالبان پر یہ واضح ہونا چاہیے کہ ہم میں صلاحیت ہے اور افغانستان کے اندر ایک مذاکراتی عمل کے آغاز اور اس کے کامیاب اختتام کی سیاسی خواہش موجود ہے'۔ یاد رہے کہ رواں ماہ یکم اکتوبر کو پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کابل میں افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی جہاں دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون کے لیے ٹاسک ٹیمیں بنانے پر اتفاق کیا گیا۔ جنرل قمر باجوہ اور اشرف غنی کے درمیان صدارتی محل کابل میں ملاقات ہوئی جہاں دو طرفہ تعلقات، امن و اسحتکام، انسداد دہشت گردی کے لیے کوششوں، کاروباری اور دیگر تعلقات زیر بحث آئے۔ اشرف غنی نے اس ملاقات کو افغانستان اور پاکستان کے درمیان تعلقات کا ایک نیا سیشن قرار دیا اور کہا کہ تعاون کے لیے اچھے مواقع پیدا کیے جا رہے ہیں جس سے دونوں ممالک کو فائدہ اٹھانا چاہیے۔

loading...