اشاعت کے باوقار 30 سال

کیموتھراپی سے بھی 10 ہزار گنا مفید

کیموتھراپی سے بھی 10 ہزار گنا مفید

نیویارک: کیا آپ جانتے ہیں کہ جان لیوا مرض کینسر کے علاج کے لیے لیموں اور میٹھا سوڈا (بیکنگ سوڈا) کیموتھراپی کے مقابلے میں بھی دس ہزا گنا مفید ہے۔ لیموں کو دنیا کے صحت مند ترین پھلوں میں شمار کیا جاتا ہے جس کے بے پناہ فائدے ہیں۔ لیموں کا استعمال مختلف اعتبار سے کارگر ہوتا ہے جیسے کہ بدہضمی سے نجات کے لیے، خون کی روانی میں بہتری لانے کے لیے، پھپھوندی سے نجات کے لیے، جراثیم ہلاک کرنے کےلیے وغیرہ۔ یہی وجہ ہے کہ مختلف اقسام کی کریموں اور فیس واش میں بھی لیموں کا رس استعمال کیا جاتا ہے۔ دوسری جانب میٹھا سوڈا (بیکنگ سوڈا) عمومی طور پر کھانوں میں ڈالا جاتا ہے۔ لیکن حال ہی میں انکشاف ہوا ہے کہ اگر لیموں کے رس اور کھانے کا سوڈا ایک ساتھ ملا کر استعمال کرلیے جائیں تو کینسر تک کا علاج کیا جا سکتا ہے۔ جدید تحقیقات سے معلوم ہوا ہے کہ لیموں کی تقریباً تمام اقسام ہی ایسے مادّوں سے بھرپور ہوتی ہیں جو سرطان کے علاج میں اکسیر کی حیثیت رکھتے ہیں۔
ایک بڑی دوا ساز کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے طویل تحقیق کے بعد لیموں میں 12 مختلف اقسام کے کینسر میں مبتلا خلیوں کو ہلاک کرنے کی قدرتی صلاحیت دریافت کی ہے جب کہ لیموں کا رس کینسر میں مبتلا خلیوں کو پھیلنے سے بھی روکتا ہے۔ علاوہ ازیں کینسر کے علاج میں رائج طریقے ’’کیموتھراپی‘‘ اور دواؤں کے مقابلے میں بھی لیموں کا رس 10 ہزار گنا زیادہ مفید پایا گیا ہے، بشرطیکہ اس کے ساتھ میٹھا سوڈا بھی شامل ہو۔ اس کا طریقہ یہ ہے کہ 240 ملی لیٹر گرم پانی میں ایک چمچہ کھانے کا سوڈا اور ایک عدد لیموں کا رس حل کرکے رکھ لیا جائے۔ اس محلول کو دن میں کم از کم 3 مرتبہ پینے سے کینسر کی شدت نمایاں طور پر کم ہوجاتی ہے اور مریض کو افاقہ ہوتا ہے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ اگر لیموں کو کھانے کے سوڈے (میٹھے سوڈے) میں ملا کر استعمال کیا جائے تو اس کے نہ صرف بہتر نتائج حاصل ہوتے ہیں بلکہ باقاعدگی سے استعمال کرنے پر کوئی سائیڈ ایفکیٹس بھی سامنے نہیں آتے۔

loading...