اشاعت کے باوقار 30 سال

بھارت: 7سالہ بچی کے ریپ کا ملزم پولیس اہل کار گرفتار

بھارت: 7سالہ بچی کے ریپ کا ملزم پولیس اہل کار گرفتار

نئی دہلی : بھارتی پولیس کے ایک اہل کار کو مبینہ طور پر نشے کی حالت میں سات سالہ بچی کا ریپ کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا۔ فرا نسیسی خبر رسا ں ادارے کو پولیس سپرینٹنڈنٹ وی پن ٹاڈا نے بتایا کہ ریاست اتر پردیش میں ایک اہل کار کے کوارٹر میں بچی کو برہنہ دیکھ کر ساتھی پولیس اہل کاروں نے خطرے کو بھانپ لیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ 'ہم نے بچی کو میڈیکل جائزے کے لیے بھیجا ہے اور حتمی رپورٹ کا انتظار ہے'۔ وی پی ٹاڈا نے کہا کہ 'پولیس اہل کار کے بھی میڈیکل ٹیسٹ کیے جائیں گے تاکہ اس بات کی تصدیق کی جا سکے کہ انھوں نے کوارٹر میں نشہ کیا تھا یا نہیں'۔ بھارتی خبر ایجنسی پریس ٹرسٹ آف انڈیا نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ مقامی رہائشیوں میں طیش بڑھ گیا تھا اور انھوں نے پولیس پوسٹ کو بھی نذر آتش کرنے کی کوشش کی۔ دوسری جانب پولیس سپرینٹنڈنٹ کا کہنا تھا کہ جب ہجوم کو یقین دلایا گیا کہ ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے تو وہ منتشر ہو گئے۔ خیال رہے کہ بھارت میں جنسی طور پر ہراساں کرنے کے واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں اور کم عمروں کے ساتھ جنسی زیادتی کے ریکارڈ میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ بھارتی حکومت کے اعداد و شمار کے مطابق 2015 میں اس طرح کے20 ہزار واقعات پیش آئے تھے۔ یاد رہے کہ 2012 میں دہلی میں ایک طالبہ کے ساتھ گینگ ریپ کے بعد بھارتی قوانین کے خلاف دنیا بھر میں تشویش کا اظہار کیا گیا تھا جب کہ بھارت میں احتجاج کی ایک شدید لہر اٹھی تھی۔ دہلی واقعے کے بعد بھارتی قوانین میں سختی کی گئی لیکن اس کے باوجود جنسی طور پر ہراساں کرنے اور زیادتی کے واقعات تاحال پیش آ رہے ہیں۔