اشاعت کے باوقار 30 سال

سوشل میڈیا مودی کو بھاری پڑ گیا

سوشل میڈیا مودی کو بھاری پڑ گیا

ممبئی: مہاراشٹر نونرمان سینا (ایم این ایس) کے صدر راج ٹھاکرے نے کہا ہے کہ جس سوشل میڈیا کی مدد سے وزیر اعظم نریندر مودی نے 2014 میں اقتدار حاصل کیا اور اب وہی سوشل میڈیا مودی اور بی جے پی کو بھاری پڑ رہا ہے۔ اس کا اظہار راج ٹھاکرے نے اپنے سرکاری فیس بک کے صفحے پر کیا ہے۔ راج ٹھاکرے نے فیس بک پر کہا کہ جیسا آپ بوتے ہیں ویسا ہی کاٹتے ہیں۔ بی جے پی کے لئے یہ کہاوت سچ ثابت ہوئی ہے، بی جے پی نے گمراہ کن میڈیا مہم چلا کر عام آدمی کے ساتھ دھوکہ کیا، اب سوشل میڈیا کا وہی ہتھیار بی جے پی پر الٹا پڑ رہا ہے، 2014ء کے عام انتخابات جیتنے کے لئے اخلاقیات اور اصول کوانداز کر دیا گیا تھا۔ راج ٹھاکرے نے کہا ہے کہ لوگوں کے جذبات بھڑکانے کے لئے ہر طرح کے ہتھکنڈے اپنائے گئے، وہ لوگ جنہوں نے ان کے خلاف آواز بلند کی اور احتجاج کی آواز کو دبا دیا گیا، اگر حکومت نے اچھا کام کیا تو عوام اسے نظر انداز کر دیتے، لیکن وعدے پورے کرنے کی بات تو چھوڑ دیجئے سب سے زیادہ المناک یہ بات ہے کہ ان وعدوں کو انتخابی جملہ بتایا گیا۔ جس سے بی جے پی اور مودی کوذلالت کا سامنا کرنا پڑا۔ راج ٹھاکرے نے نوٹ بندی کو ایک بڑی بھول قرار دیتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی ایک بڑی غلطی تھی، لوگوں کی ملازمتیں ختم ہوئیں اور افراط زر بڑھ گئی، لیکن حکومت کے بارے میں کوئی سوال نہیں اٹھایا پایا، وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ وہ ’’جنتا کے نوکر‘‘ اور ’’پرتھم سیوک ‘‘ہیں، اگر یہ معاملہ ہے تو پھر حکومت کی ناکامی پر سوال اٹھانے کا حق نہیں ہے۔

loading...