اشاعت کے باوقار 30 سال

ملک کی معیشت تباہ ہو رہی ہے اور وزیر اعظم خواب بیچ رہے ہیں

ملک کی معیشت تباہ ہورہی ہے اور وزیر اعظم  خواب بیچ رہے ہیں

حیدرآباد: حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ و صدر کل ہند مجلس اتحاد المسلمین نے کہا ہے کہ ایک طرف ملک کی معیشت تباہ ہو رہی ہے تو دوسری طرف وزیر اعظم نریندر مودی خواب بیچ رہے ہیں ۔ انہوں نے سوال کیا کہ وزیر اعظم یہ بتائیں کہ وہ کون سے خواب بیچ رہے ہیں اور کون سے خواب دکھا رہے ہیں؟ انہوں نے سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا کی جانب سے مودی حکومت پر کی گئی نکتہ چینی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یشونت سنہا ایک بیوروکریٹ کے ساتھ ساتھ بی جے پی کے مارگ درشک اور سابق مرکزی وزیر بھی رہے ہیں ۔وہ بی جے پی حکومت کو آئینہ دکھارہے ہیں۔اس کے باوجود اگر بی جے پی حکومت ہوش کے ناخن نہیں لیتی ہے تو یہ مناسب نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ یشونت سنہا کے بیان کو تکنیکی وجوہات قرار دیا جا رہا ہے۔حکومت برآمد کرنے والوں کے 65 ہزار کروڑ روپئے ادا کرنے کے موقف میں نہیں ہے۔ ملک کا تعمیراتی شعبہ ٹھپ ہوکر رہ گیا ہے۔ چھوٹی اور اوسط درجہ کی صنعتیں بند ہو گئی ہیں۔ نوجوانوں کے لئے روزگار نہیں ہے ۔ آخر وزیر اعظم ملک کو کون سے خواب دکھانا چاہتے ہیں اور کون سے خواب بیچ رہے ہیں؟ انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی سے ملک کی معیشت کو کافی نقصان ہوا اور جی ایس ٹی سے بھی لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ نہ صرف یشونت سنہا بلکہ سبرا منیم سوامی نے بھی دبے الفاظ میں کہہ دیا ہے کہ ملک کی معیشت متاثر ہو رہی ہے۔
بی جے پی کے ایک سرکردہ نظریہ ساز نے بھی کہا ہے کہ ملک کی معیشت ڈوب رہی ہے۔ تمام افراد کے کہنے کے باوجود بادشاہ سلامت (مودی ) ماننے کے لئے تیار نہیں ہیں ۔بادشاہ سلامت (مودی ) یہ سمجھتے ہیں کہ وہ خواب بیچ دیں گے ، جملہ بازی کر دیں گے اور لوگ واہ واہ کریں گے۔ صدر مجلس نے کہا کہ نجی شعبہ کے لوگوں کا ماننا ہے کہ دو سال تک حالات میں سدھار ممکن نہیں ہے۔ آنے والے دنوں میں مزید پریشان کن حالات سے ہم کو گزرنا ہے۔ انہوں نے ملک کے مختلف شعبوں میں ماہرین معاشیات پر بھی نکتہ چینی کی اور کہا کہ ہر طرف ماہر معاشیات نظر آرہے ہیں۔ نیتی آیوگ میں ماہرین معاشیات ہیں، اکنامک اڈوائزری کونسل میں ماہرین معاشیات ہیں، وزیر فائنانس خود بڑے ماہر معاشیات ہیں، آر بی آئی کی مانیٹرنگ کمیٹی میں ماہرین معاشیات ہیں۔ کتنے لوگ مل کر ملک کی معیشت کو پکائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کی قابلیت ایک طرف ہے لیکن وہ یہ سمجھتے ہیں کہ وہ ہی قابل ہیں اور ان ہی کی بات مانی جائے ۔
صدر مجلس نے کہا کہ وزیر اعظم گجرات ماڈل کی بات کرتے ہیں ۔بی جے پی نے سوشلزم اختیار کر لیا ہے۔ انہوں نے بی جے پی کو مشورہ دیا کہ وہ سیکولرازم بھی اختیار کرلے۔ انہوں نے سوال کیا کہ گجرات میں سماجی اور معاشی طور پر پسماندہ مسلمانوں کو ریزرویشن کیوں نہیں دیئے جاتے؟| صدر مجلس نے بنارس ہندو یونیورسٹی میں پیش آئے واقعہ پر کہا کہ اگر کوئی بھی حکومت طلبہ برادری کو تنگ کرتی ہے اور حکومت ان کی آواز کو دبانے کی کوشش کرتی ہے تو ان کا سیاسی مستقبل زیادہ دنوں تک نہیں چلتا ۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کے ویثرولس کو ساری دنیا نے دیکھا ۔ اس یونیورسٹی میں لڑکیوں کو پیٹا گیا ۔یہ واقعہ کافی بدبختانہ ہے ۔یہ ایک سیاہ دن رہا ہے ۔ انہوں نے حیدرآباد میں نابالغ لڑکیوں کی معمر عرب شہریوں سے ہو رہی کنٹریکٹ شادیوں کے مسئلہ پر کہا کہ پولیس اچھا کام کر رہی ہے اور ایسے واقعات کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے روہنگیا مسلمانوں کے تعلق سے مرکز کی پالیسی پر بھی نکتہ چینی کی اور کہا کہ یہ ہندو یا مسلمان کا نہیں بلکہ انسانیت کا مسئلہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب ملک میں سری لنکا کے تمل باشندوں کو جگہ دی جا سکتی ہے اور پاکستان اور افغانستان کے لوگوں کو ملک میں رہنے کی اجازت دی جا سکتی ہے تو پھر روہنگیا مسلمانوں کو اس کی کیوں اجازت نہیں دی جاسکتی ۔انہوں نے کہا کہ ملک کی سلامتی کے مسئلہ کو روہنگیا مسلمانوں سے جوڑنا نامناسب ہے اور گزشتہ دو سال کے دوران حکومت ایک بھی درج کی گئی ایف آئی آر ان روہنگیا مسلمانوں کے خلاف دکھا دے۔

loading...