اشاعت کے باوقار 30 سال

آئی سی سی ٹیسٹ اور ون ڈے لیگ کھٹائی میں پڑنے کا خدشہ

آئی سی سی ٹیسٹ اور ون ڈے لیگ کھٹائی میں پڑنے کا خدشہ

لاہور : پاکستان کی مخالفت کے سبب آئی سی سی ٹیسٹ اور ون ڈے لیگ کھٹائی میں پڑنے کا خدشہ پیدا ہو گیا، پی سی بی نے نئے کیلنڈر میں ایسی نوعیت کے مقابلوں کا انعقاد بھارت کے ساتھ سیریز سے مشروط کر دیا۔تفصیلات کے مطابق آئی سی سی نے انٹرنیشنل کرکٹ کومزید دلچسپ اورسنسنی خیز بنانے کے لئے ٹیسٹ لیگ متعارف کرانے پر غور شروع کیا ہے جس میں 9 ٹیمیں 2 سال کے دوران آپس میں میچز کھیلیں گی اور ٹاپ ٹیم کا فیصلہ کرنے کے لیے پلے آف ہوں گے ، ون ڈے لیگ میں 13 ٹیمیں ایک دوسرے کے مقابل آئیں گی جنہیں ورلڈ کپ کوالیفائرکا درجہ ملے گا، اس حوالے سے حتمی فیصلہ اکتوبر میں آکلینڈ میں شیڈول آئی سی سی بورڈ میٹنگ میں کیا جائے گا، فارغ وقت میں ٹیمیں باہمی سیریز شیڈول کر سکیں گی۔ ایک کرکٹ ویب سائٹ کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے نئے سٹرکچر سے متعلق حتمی فیصلے کو پاک بھارت سیریز سے مشروط کردیا ہے۔ ایک پی سی بی آفیشل نے کہاکہ ہم نے ٹیسٹ یا ون ڈے لیگز کے دوران انفرادی طور پر کوئی سیریز شیڈول نہ کرنے پر اتفاق کیا ہے تاہم بھارت کو یہ یقین دہانی کرانا ہو گی کہ وہ باہمی سیریز کے معاملے میں پیچھے نہیں ہٹے گا، نیا مجوزہ سٹرکچر صرف اسی صورت قابل عمل ہو سکے گا جب پاکستان اور بھارت کے مابین مقابلے بھی شیڈول کیے جائیں، ایسا نہ ہوا تو ہم سے نئے سٹرکچر کے فیصلے پر دستخط کرنے کی توقع نہ کی جائے، بھارت کے ساتھ سیریز نہ ہونے پر ہمیں نشریاتی حقوق سمیت 130 ملین ڈالرز کا نقصان اٹھانا پڑے گا۔

loading...