اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

جونز ٹاؤن میں اجتماعی خود کشی

حکومت ساتھ مذاکرات میں آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے نمائندے پھٹ پڑے

حکومت ساتھ مذاکرات میں آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے نمائندے پھٹ پڑے

اسلام آباد : آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن اورحکومت کے درمیان مذاکرات کے دورا ن ایسوسی ایشن کے نمائندے پھٹ پڑے، ان کا کہنا تھاکہ بنیادی مسئلہ ناقص سڑکیں ہیں جن سے توجہ ہٹائی جا رہی ہے۔ این ایچ اے اور حکومت سڑکوں پر توجہ دے ،جنوبی پنجاب میں سڑکوں کی حالت ایسی نہیں کہ وہاں حادثات پیش نہ آئیں،زیاد تر حادثات انہیں خستہ حال سڑکوں پر پیش آتے ہیں ، اگر یہ سڑکیں ٹھیک کر دی جائیں تو حادثات کم پیش آئیں گے۔تفصیلات مطابق بدھ کے روز آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن اورحکومت کے درمیان مذاکرات ٹینکرز ایسوسی ایشن کے مسائل کے حل اور ہڑتال کے خاتمے کے لئے مذاکرات ہوئے ۔ذرائع نے بتایا کہ اجلاس کے دوران آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے نمائندے حکومت کیخلاف پھٹ پڑے ۔انکا کہنا تھا کہ ملک میں خصوصاً جنوبی پنجاب میں سڑکوں کی حالت انتہائی خراب ہے اور بیشتر سڑکیں سنگل ہیں جہاں پر اگر تھوڑی سی بھی گاڑی ادھر ادھر ہو جائے تو حادثہ رونما ہو جاتا ہے۔ حکومت کو چاہیئے کہ وہ جنوبی پنجاب میں بھی سڑکیں بنانے پر توجہ دے سانحہ احمد پور شرقیہ میں عوام کا اپنا بھی قصور ہے کہ اگر ایک جگہ ٹینکرز کو حادثہ پیش آتا ہے تو لوگ تیل اکٹھا کرنے کیوں آتے ہیں۔ ڈرائیونگ لائسنس کے حوالے سے اقدامات کئے جائیں اور کرایہ15دن کے اندر ادا کر دیا جائے مذاکرات کے بعد ترجمان اوگرا نے میڈیا کو بتایا کہ عوام کو مبارک ہو مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں اوگرا کے رولز کو عملدرآمد کرانے کے لئے مکمل طور پر اطلاع ہو گا۔ ٹینکرز ایسوسی ایشن اور کنٹریکٹر ایسوسی ایشن کے درمیان جو بھی مسائل ہونگے وہ اوگر ا کو درخواست دے سکتے ہیں ۔ ان مسائل کو حل کیا جائیگا اپنے سٹینڈرڈ پر کھڑے ہیں جبکہ ٹینکرز ایسوسی ایشن کے چیئر مین یوسف گیلانی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ و زارت کی جانب سے مطالبات مان لئے گئے ہیں ۔ 15دنوں کے بعد دوبارہ اجلاس ہو گا۔ ہڑتال ختم کرنے کی کال دی جا رہی ہے ہم نے پہلے ہڑتال کی لیکن حکومت نے کان نہیں دھرا جی ایس ٹی کے معاملے کو حل کرنے کی قین دہانی کرائی گئی ہے اور کچھ گھنٹوں تک سپلائی شروع ہو جائے گی۔

loading...