اشاعت کے باوقار 30 سال

میکسکو میں تتلیوں کا جنگل شدید خطرات سے دو چار

میکسکو میں تتلیوں کا جنگل شدید خطرات سے دو چار

میکسکو: میچیو آکان میکسکو کا ایک اہم جنگل ہے جہاں ہر سال امریکا اور کینیڈا سے کروڑوں تتلیاں 2500 میل کا سفر طے کرنے کے بعد آرام کے لیے آتی ہیں لیکن اب تتلیوں کے اس جنگل کو انسانی مداخلت سے شدید خطرات لاحق ہیں۔ ہر سال کرہ ارض پر نارنجی اور سیاہ تتلیوں کی سب سے بڑی نقل مکانی ہوتی ہے اور میچیو آکان میں تتلیوں کا مسکن تتلیوں سے بھر جاتا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ گویا میلوں دور تک تتلیوں کا قالین بچھا ہوا ہے۔ اس کے علاوہ سارے درخت ان تتلیوں سے بھر جاتے ہیں۔ یہ تتلیاں ڈیٹرائٹ، ونی پیگ اور ٹورنٹو جیسے علاقوں سے پرواز کر کے ہزاروں کلومیٹر کا فاصلہ طے کر کے ہرسال عین اس مقام پر پہنچتی ہے۔ یہ عمل آج بھی ایک معمہ بنا ہوا ہے لیکن ماہرین کا خیال ہے کہ مونارک تتلیاں سورج ، ستاروں اور زمین کے مقناطیسی میدان کو کام میں لاکر اتنا طویل فاصلہ طے کرتی ہیں۔
ہرسال میچیو آکان میں اکتوبر کا مہینہ تتلیوں کا آمد کا وقت ہوتا ہے اورتتلیاں اگلے پانچ ماہ یہاں گزارتی ہیں۔ تتلیوں کے وزن سے درختوں کی شاخیں بھی مڑ جاتی ہیں جب کہ ہرسال فروری اور مارچ کا مہینہ ان تتلیوں سے بھرا ہوا ہوتا ہے اور خوبصورت تتلیوں سے پورا جنگل نارنجی ہو جاتا ہے لیکن یہاں درخت کٹنے سے اب تتلیوں کے عارضی گھر اجڑ رہے ہیں اور اب تک نو ہیکٹر جنگلات تباہ کئے جا چکے ہیں۔ ناکافی افرادی قوت کی وجہ سے ٹمبر مافیا اب بھی سرگرم ہے اور جنگل انتظامیہ نے مزید اختیارات اور افرادی قوت کا مطالبہ کیا ہے۔ اسی جنگل میں سونے، چاندی اور تانبے کی ایک کان بھی موجود ہے جسے 25 سال بعد دوبارہ کھول دیا گیا ہے اوراس کی آلودگی تتلیوں کے اس مسکن کے لئے موت کا پیغام ثابت ہو گی، دوسری جانب فصلوں پر کیڑے مار ادویات سے بھی تتلیاں موت کی شکار ہو رہی ہیں۔