اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

جونز ٹاؤن میں اجتماعی خود کشی

ایس ای سی پی چیئرمین کے لئے 3 سینئر ترین افسران کے ناموں پر غور

ایس ای سی پی چیئرمین کے لئے 3 سینئر ترین افسران کے ناموں پر غور

اسلام آباد: وزارت خزانہ نے ایس ای سی پی چےئرمین ظفر حجازی کی ریکارڈ ٹمپرنگ میں گرفتاری کے بعد تاحال نیا چیئرمین تعینات نہیں کیا لیکن سینئر ترین امیدواروں میں طاہر محمود، ظفر عبداللہ اور عائف سعید کے نام شامل ہیں۔جمعہ کے روز چوہدری شوگر ملز کے ریکارڈ میں ٹمپرنگ اور ماتحتوں کو دھمکانے کا الزام ثابت ہونے کے بعد عدالت نے ایس ای سی پی چیئرمین ظفر حجازی کی ضمانت منسوخ کر دی تھی جس کے بعد ایف آئی اے نے ظفر حجازی کو عدالت کے احاطے سے گرفتار کر لیا تھا لیکن گرفتاری کے معاملے کے بعد بھی وزارت خزانہ نے ہفتہ کے روز بھی ظفر حجازی کی معطلی کا نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا حالانکہ وزارت خزانہ کے قوانین کے مطابق جس طرح ظفر حجازی گرفتار ہوئے تو فوراً ان کی گرفتاری کے بعد معطلی کا نوٹیفکیشن جاری ہو جاتا جو کہ نہیں ہوا اور ان کی جگہ سینئر ترین کمشنر کی تعیناتی کردی جاتی کیونکہ اس وقت آفس میں چیئرمین نہیں ہے،گزشتہ روز بھی وزارت خزانہ کی جانب سے ایس ای سی پی چیئرمین کے لئے سینئر ترین امیدوار طاہر محمود کے نام پر غور کیا گیا لیکن طاہر محمود جو کہ ظفر حجازی کے خلاف وعدہ معاف گواہ بنے اس لئے ان کا نام منسوخ کر دیا گیا لیکن طاہرمحمود ملک سے باہر تھے جونہی ان کو ظفر حجازی کی گرفتاری کا پتہ چلا تو وہ واپس آ گئے ہیں اور پیر کے روز سے افس جوائن کریں گے۔ دوسری جانب وزارت خزانہ طاہر محمود کے علاوہ دیگر سینئرز افسران ظفر عبداللہ اور عائف سعید کے ناموں پر بھی غور کر رہی ہے لیکن وہ ابھی تک کنٹریکٹ ملازم ہیں جو کہ وزارت کے لئے دردسر بن گیا ہے۔

loading...