اشاعت کے باوقار 30 سال

جیکب آباد، بیگاری کینال میں 150 فٹ چوڑا شگاف

جیکب آباد: جیکب آباد کے قریب بیگاری کینال میں 150 فٹ چوڑا شگاف، درجنوں دیہات اور ہزاروں ایکڑ زرعی زمین ڈوب گئی، سینکڑوں لوگ متاثر، محکمہ آبپاشی اور ضلعی افسران متاثرین کی مدد کے لیے نہیں پہنچے، متاثرین کا انتظامیہ کے خلاف احتجاج۔ تفصیلات کے مطابق جیکب آباد کے قریب بیگاری کینال میں دیھ تھیم کے مقام پر 150 فٹ چھوڑا شگاف پڑنے کے باعث ضلع جیکب آباد اور ضلع شکارپور کے درجنوں دیہات شیران پور، گوٹھ چانڈیا، پٹھان واہ گوٹھ، مگسی گوٹھ سمیت دیگر دیہات و قصبے زیر آب آگئے جبکہ ہزاروں ایکڑ زرعی زمین پانی میں ڈوب گئی، شگاف کے باعث زیر آب آنے والے دیہاتوں اور قصبوں میں لوگوں کا لاکھوں روپیوں کا قیمتی سامان، اناج اور بھیڑ بکریاں بھی بہہ گیا، بیگاری کینال کو پڑنے والے شگاف کے بعد محکمہ آبپاشی اور ضلع انتظامیہ کا کوئی نمائندہ متاثرہ علاقے میں نہیں پہنچا جس کی وجہ سے متاثرہ علاقوں کے مکینوں نے اپنی مدد آپ کے تحت شگاف کو پر کرنے کی کوشش کی مگر وہ ناکام رہے، شگاف کے بعد متاثرہ علاقے کے مکینوں نے نقل مکانی شروع کردی اور محفوظ مقام کی جانب منتقل ہوگئے ہیں، شگاف کی اطلاع کے باوجود ضلع انتظامیہ اور محکمہ آبپاشی کا کوئی حکام نہیں پہنچنے کے خلاف شہران پور کے مکینوں نے سردار عبدالغفور تھیم کی قیادت میں احتجاج کیا اور انتظامیہ کے خلاف نعریبازی کی، متاثرین نے کہا کہ شگاف کو 24 گھنٹوں سے زائد کا وقت گذر چکا ہے مگر کوئی سرکاری عملدار نہیں پہنچا ہے انہوں نے کہا کہ ہمارا کروڑوں کا نقصان ہوچکا ہے اور ہمارے سینکڑوں لوگ کھلے آسمان تلے بے یارو مددگار بیٹھے ہوئے ہیں مگر ہماری دادرسی کے لیے کوئی نہیں آیا، دوسری جانب رابطہ کرنے پر چیف انجینئر آبپاشی محمد اسحاق عباسی نے کہا کہ شام تک شگاف پر ہو جائیں گے رات کی تاریکی میں ہم کچھ نہیں کر سکتے تھے۔

loading...