اشاعت کے باوقار 30 سال

اسپین فٹبال تنظیم کے سربراہ بیٹے اور ساتھیوں سمیت گرفتار

میڈریڈ : اسپین میں فٹبال کے امور چلانے والی تنظیم اسپین فٹبال فیڈریشن کے صدر اینجل ماریہ ولر کو ان کے بیٹے گورکا ولر اور فیڈریشن کے دیگر دو اعلیٰ عہدیداران سمیت کرپشن کے الزام میں فیڈریشن کے دفتر سے گرفتار کرلیا گیا۔ سرکاری وکیل اینٹی کرپشن کا کہنا تھا کہ اینجل ماریہ ولر کو اسپین میں ہونے والے فٹبال میچوں میں غیر مناسب انتظامات کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا، جن سے ان کے بیٹے کو ذاتی مالی فائدہ حاصل ہوا تھا۔ اینجل ماریہ ولر اسپین فٹبال فیڈریشن کے سربراہ ہونے کے ساتھ ساتھ فٹبال کی عالمی تنظیم کے سینئر نائب صدر اور یورپی یونین فٹبال ایسوسی ایشن کے نائب صدر کی حیثیت سے بھی اپنے فرائض سر انجام دے رہے تھے۔ ہسپانوی پولیس کے مطابق چاروں افراد کو فٹبال میچ کے ناماسب انتظام، فنڈز کے غلط استعمال، کرپشن اور جعلی دستاویزات بنانے کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ تنظیم نے اینجل ماریہ ولر کے حوالے سے میڈیا میں آنے والی خبروں کا نوٹس لیا، چونکہ یہ ہسپانوی فٹبال کا اندرونی معاملہ ہے لہذا فیفا چاہتا ہے کہ اس معاملے کی تفصیلات اسپین فٹبال فیڈریشن سے ہی طلب کی جائیں۔ اسپین میں کھیلوں کی اعلی کونسل کی شکایت پر پولیس نے 2016 کے اوائل میں ہی تحقیقات کا آغاز کر دیا تھا جس میں یہ بات سامنے آئی کہ اسپین فٹبال فیڈریشن کے صدر نے قومی ٹیم کے جو بین الاقوامی مقابلے منعقد کیے ان سے ان کے بیٹے کو ذاتی کاروباری اور مالی فوائد حاصل ہوئے۔ مذکورہ افراد کی گرفتاری کے بعد اسپین کے وزیر کھیل، ثقافت اور تعلیم انیگو مینڈیز ڈی ویگو نے قومی ٹیلی ویژن سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اسپین میں قانون کی بالادستی ہے اور قانون سب کے لیے برابر ہے جبکہ کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے۔ یورپی فٹبال تنظیم یوئیفا کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا کہ تنظیم اینجل ماریہ ولر اور ان کے ساتھیوں کی گرفتاری کی خبروں کے حوالے سے واقف ہے تاہم اس وقت اس معاملے پر تبصرہ نہیں کرنا چاہتی۔

Police arrest Spanish football federation president
loading...