اشاعت کے باوقار 30 سال

پنجاب کے تھانوں میں مقدمات کا کمپیوٹرائزاڈ اندراج

 پنجاب کے تھانوں میں مقدمات کا کمپیوٹرائزاڈ اندراج

لاہور: وائس چانسلر انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی ڈاکٹر عمر سیف نے بیا ن دیا ہے کہ پنجاب کے 36 اضلاع کے 714 تھانوں میں مقدما ت کا کمپیوٹرائزاڈ اندراج جاری ہے، جس کے بعد ملزمان کا ریکارڈ نادرا کے ساتھ منسلک ہو گیا ۔ وی سی ڈاکٹر عمر سیف کا کہنا تھا کہ پنجاب کے 36 اضلاع کے 714 تھانوں میں مقدمات کا کمپیوٹرائزاڈ اندراج کر دیا گیا ہے جس میں 30 ماہ میں 8 لاکھ 50 ہزار 27 ایف آئی آرز کی کمپیوٹرائزڈر جسٹریشن ہوئی ، جس میں پولیس ر یکارڈ آفس میں 3 لاکھ 92 ہزار 84 مجرمان کے فنگر پرنٹس کا ریکارڈ جمع ہو گیا ہے، اور یہ سارا ریکارڈ نادرا کےساتھ منسلک ہے۔
عمرسیف کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کا ریکارڈ بھی کمپیوٹرائزڈ کر دیا گیا جس کے مثبت نتائج آ رہے ہیں، پنجاب کے بعد اب سندھ میں یہ سسٹم شروع کر دیا گیا ہے۔ وائس چانسلر عمر سیف کا کہنا تھا کہ سسٹم کی کامیابی کو دیکھتے ہوئے گلگت بلتستان اور بلوچستان سے اس سسٹم کی فراہمی کے لئے درخواستیں آ رہی ہیں۔

loading...