اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

فرانس میں شہنشاہیت کا خاتمہ

ترقی کی راہ میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا سکتی

ترقی کی راہ میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا سکتی

اسلام آباد: صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان ترقی کی جس شاہراہ پر گامزن ہے، اس میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا سکتی، قوموں کی زندگی میں پریشانیاں آتی رہتی ہیں ، پریشانی کی کوئی ضرورت نہیں، ملک کے محنتی و جفاکش عوام اور آنے والی نسلوں کے مستقبل کو محفوظ بنانے کے لیے سیاسی و اقتصادی استحکام کی جد و جہد جاری رہے گی اور پاکستان کے باشعور عوام اس کی راہ میں آنے والی ہر رکاوٹ کو اپنے عزم و حوصلے سے شکست دینے میں کامیاب ہو جائیں گے، وطنِ عزیز کے صنعت کاروں، تاجروں اور اندرونی و بیرونی سرمایہ کاروں سے کہتا ہوں کہ وہ کسی قسم کے تحفظات اور خوف کا شکار ہوئے بغیر اپنی سرگرمیاں جاری رکھیں کیونکہ خرابیوں کے دن بیت چکے، اب پاکستان کو ترقی کرنی ہے اور اپنے شاندار قومی اتحاد سے نہ صرف اپنی قسمت بنانی ہے بلکہ اس خطے کے کروڑوں عوام کی خوش حالی کے لیے بھی اپنی ذمہ داریاں خوش دلی سے ادا کرنی ہیں۔ صدر مملکت نے یہ بات اسلام آباد میں سفارت کاروں کے اعزاز میں دئے گئے عشائیے سے خطاب کر تے ہوئے کہی جس کا اہتمام لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز نے کیا تھا۔ اس موقع پر فلسطین کے سفیر ، سفارتی برادری کے نمائندے ولید ابو علی اور لاہور چیمبر کے صدر عبد الباسط نے بھی خطاب کیا، سفیروں ، سرمایہ کاروں اور معز ز مہمانوں کی ایک بڑی تعداد تقریب میں شریک تھی۔ صدر مملکت ممنون حسین نے کہا کہ بد امنی اور دہشت گردی سے نمٹنے کی کوششوں کے ساتھ حکومت نے اقتصادی بحالی کے ایجنڈے کو بھی برابر کی اہمیت دی ہے اور اللہ تعالی کے فضل و کرم سے پاکستان اقتصادی ترقی کے ایک سنہری دور میں داخل ہو چکا ہے، جی ڈی پی ، زر مبادلہ کے ذخائر اور اندرونی و بیرونی سرمایہ کاری میں خاطر خواہ اضافہ اور افراطِ زر میں نمایاں کمی اِن مثبت اور حوصلہ افزا تبدیلیوں کے نا قابلِ تردید اشارے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہماری ان کامیابیوں کی بنیاد صنعتی و تجارتی شعبوں کے لیے اختیار کی گئی بہترین پالیسیاں ہیں جن کے سبب پاکستان میں تجارت اور سرمایہ کاری میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔ اس سلسلے میں صنعتی و تجارتی شعبوں کو خصوصی رعایتیں دی گئیں اور اندرونی و بیرونی سرمایہ کاری کے لیے ایسی لچک دار حکمتِ عملی اختیار کی گئی جس نے پاکستان کو صنعت و تجارت اور سرمایہ کاری کے لیے خطے کا اہم ترین ملک بنا دیا ہے۔صدر مملکت نے کہا کہ ملک میں اندرونی و بیرونی سرمایہ کاری میں بتدریج اضافہ ہو رہا ہے جو ایک حوصلہ افزا پیش رفت ہے۔ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے نے ہماری اِن کوششوں کو مہمیز دی ہے جب کہ شنگھائی تعاون تنظیم سمیت دیگر عالمی اداروں میں پاکستان کے فعال کردار اور دوست ممالک کے ساتھ آزاد تجارتی معاہدے بھی اس ضمن میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ انھوں نے توقع ظاہر کی کہ وقت کے ساتھ ساتھ اس میں مزید اضافہ ہو گا اور ملک کی ترقی اور خوش حالی کا سفر تیز تر ہو جائے گا۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان آج ترقی کی جس شاہراہ پر گامزن ہے، اس میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا سکتی کیونکہ ہمارا نصب العین آنے والی نسلوں کی خوش حالی اور مستقبل کے تقاضے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے محنتی و جفاکش عوام اور آنے والی نسلوں کے مستقبل کو محفوظ بنانے کے لیے سیاسی و اقتصادی استحکام کی جدو جہد جاری رہے گی اور پاکستان کے باشعور عوام اس کی راہ میں آنے والی ہر رکاوٹ کو اپنے عزم و حوصلے سے شکست دیں گے۔ صدر مملکت نے اس موقعہ پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ لاہور چیمبر نے حلا ل فوڈ کی برآمدات میں اضافے کے لیے بڑی محنت سے کام لیا ہے۔ انھوں نے سرمایہ کاروں اور شرکا سے کہا کہ پرانی منڈیوں کو برقرار رکھتے ہوئے پاکستان کی دیگر مصنوعات کی کھپت کے لیے نئی منڈیاں بھی تلاش کی جائیں اور ملک کے مختلف حصوں میں پائی جانے والی معدنیات سمیت بعض دیگر شعبوں کی ترقی کے لیے اندرونی و بیرونی سرمایہ کاری پر بھی توجہ دی جائے۔ درآمد برآمد کے معاملات میں معلومات کے ضمن میں روایتی چینل بعض اوقات اتنے کارگر ثابت نہیں ہو سکتے جتنا چیمبرز اور تاجروں اور صنعت کاروں کی تنظیمیں مثالی کردار ادا کر سکتی ہیں۔ اس لیے میں چاہوں گا کہ وفاق ہائے ایوان صنعت و تجارت اور اس سے منسلک ادارے سفارت کار برادری کے ساتھ متحرک ربطِ ضبط قائم کر کے دو طرفہ تجارت، سرمایہ کاری اور برآمدات و درآمدات کے فروغ کے سلسلے میں اپنا مفید کردار ادا کریں۔ صدر مملکت نے توقع کا اظہار کیا کہ اس سے لاہور چیمبر سمیت دیگر قومی اداروں کی سرگرمیوں میں مزید وسعت پیدا ہو گی۔صدر مملکت نے کہا کہ مستقبل زرعی معیشت سے متعلق ٹیکنالوجی کا ہے، اس لیے اس شعبے میں زیادہ سرمایہ کاری پر توجہ دی جائے۔