اشاعت کے باوقار 30 سال

برطانیہ کے عام انتخابات میں 12 پاکستانی نژاد افراد ممبر پارلیمنٹ بن گئے

برطانیہ کے عام انتخابات میں 12 پاکستانی نژاد افراد ممبر پارلیمنٹ بن گئے

لندن: برطانیہ کے عام انتخابات میں 5 خواتین سمیت 12 پاکستانی نژاد افراد کامیاب ہوئے ہیں جبکہ مجموعی طور پر 30 پاکستانی نژاد امیدواروں نے الیکشن میں حصہ لیا۔ لندن کے علاقہ ٹوٹنگ سے لیبر پارٹی کی روزینہ خان کامیاب ہوئی ہیں۔ ایک مکینک کی بیٹی نے اپنے کنزرویٹو حریف ڈین واٹکنز کو شکست دی۔ برمنگھم سے لیبر پارٹی کی شبانہ محمود ہاؤس آف کامنز کی ممبر منتخب ہوئی ہیں، بیرسٹر شبانہ محمود لیبر پارٹی برمنگھم کے چیئرمین کی صاحبزادی ہیں۔ پاکستانی نژاد برطانوی افضل خان مانچسٹر گورٹن سے کامیاب قرار پائے ہیں۔ انہوں نے معروف سیاستدان جارج گیلووے کو شکست دی ہے۔ بولٹن سے لیبر پارٹی کی یاسمین قریشی نے بھی کامیابی حاصل کی، یاسمین قریشی کا تعلق پنجاب کے علاقے گجرات سے ہے۔ لیبر پارٹی کے فیصل رشید وارنگٹن سے کامیاب ہوئے ہیں۔ بریڈ فورڈ ایسٹ سے لیبر پارٹی کے عمران حسین ایم پی منتخب ہوئے ہیں۔ بریڈ فورڈ ویسٹ سے لیبر پارٹی کی امیدوار نازشاہ نے بھی الیکشن جیت لیا ہے۔ لیبر پارٹی کے ٹکٹ پر ہی خالد محمود کامیاب قرار پائے ہیں۔ کنزرویٹو پارٹی کے امیدوار پاکستانی نژاد ساجد جاوید بھی اپنی نشست جیتنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ کنزرویٹو پارٹی کے امیدوار پاکستانی نڑاد رحمان چشتی نے بھی اپنی نشست جیت لی ہے۔ پاکستانی نژاد خاتون نصرت غنی بھی کامیاب قرار پائی ہیں۔ بریڈ فورڈ سے لیبر پارٹی کے ٹکٹ پر محمد یاسین نے کامیابی حاصل کی۔ اسکاٹش نیشنل پارٹی کی تسمینہ شیخ اس بار کامیاب نہیں ہو سکیں۔ کنزرویٹو پارٹی کے رہنماء اور جمائما کے بھائی زیک گولڈ اسمتھ بھی رچمنڈ پارک کی نشست سے کامیاب ہو گئے ہیں۔

loading...