اشاعت کے باوقار 30 سال

آنگ سان سوچی کی کینیڈین وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو کے ساتھ ملاقات

آنگ سان سوچی کی کینیڈین وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو کے ساتھ ملاقات

اوٹاوا: میانمار کی وزیر خارجہ آنگ سان سوچی نے گزشتہ روز کینیڈا کی وفاقیت کو سمجھنے کے لئے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو کے ساتھ ملاقات کی ہے جو کہ ایسا نظام حکومت ہے جس کے بارے میں ان کاخیال ہے کہ یہ ان کے ملک میں استحکام لا سکتا ہے۔ نوبل امن انعام یافتہ رہنما نے کہا کہ مجھے یہاں آنے پر خوشی ہو رہی ہے اور خاص طور پر کہ جب میں کینیڈا کی وفاقیت کا مطالعہ کر رہی ہوں کیونکہ یہ وہ مقام ہے جہاں ہم جانے کی کوشش کر رہے ہیں اور جہاں ایک جمہوری وفاقی یونین بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے پارلیمانی دفتر میں ٹروڈو کو مخاطب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ہمیں آپ کی طرح ایک جمہوری وفاقی قوم بننے سے قبل کچھ کام کرنے ہیں لیکن میں سمجھتی ہوں کہ ہمیں کامیابی ملے گی۔کینیڈا کا شمار ان چند مغربی ممالک میں ہوتا ہے جو میانمار میں جمہوری اصلاحات کی حمایت کرتے ہیں۔ سوچی کا کینیڈا کا دورہ دارالحکومت نیپی ڈاؤ میں میانمار کی شورش زدہ سرحدی علاقوں میں تنازعے کے خاتمے کے لئے مذاکرات کے تازہ مرحلے کے بعد ہو رہا ہے۔ ان سرحدی علاقوں میں کئی نسلی گروپس تقریباً سات دھائیوں سے ریاست کے خلاف جنگ لڑ رہی ہیں۔

loading...