اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

چین کے ساحل کے پاس فیری ڈوب گئی

لندن حملے کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں

لندن حملے کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں

لندن: برطانیہ نے کہا ہے کہ لندن حملے سے پاکستان کا کوئی تعلق نہیں ، حملہ آور خرم آن لائن ویڈیوز دیکھ کر انتہا پسند بنا۔برطانوی پولیس کے مطابق 27 سالہ خرم آن لائن ویڈیوز دیکھ کر انتہا پسند بنا اور اس کے حملے کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق لندن برج کے دو حملہ آور پاکستانی نژاد برطانوی خرم شہزاد بٹ اور مراکش نژاد برطانوی راشد رضوان تھے ۔ اسکاٹ لینڈ یارڈ نے تین میں سے دو حملہ آوروں کے نام اور تصاویر جاری کر دیں جب کہ لندن برج حملے کے لیے کرائیپرلی گئی وین سے پیٹرول بم ملے ہیں۔حملے کے بعد حراست میں لیے گئے 12 افراد کو رہا کر دیا گیا۔ مرنے والوں کو خراج پیش کرنے کے لیے لندن میں تقریب کا انعقاد ہوا جس میں مئیر لندن کی بھی شرکت ۔اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ لندن اس بزدلانہ حملے کے خلاف متحد ہے ۔ادھرلندن برج کے حملہ آورخرم بٹ کے پڑوسیوں کا کہنا ہے کہ خرم کا حلیہ ایسا تھا کہ پاکستانی کمیونٹی کے لوگ اس سے کتراتے تھے۔

loading...