اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

فرانس میں شہنشاہیت کا خاتمہ

عدالت کا بوائے فرینڈ کو چاقو سے زخمی کرنیوالی لڑکی کو سزا دینے سے انکار

لندن: آکسفورڈ یونیورسٹی میں دل کی سرجن بننے والی لڑکی نے اپنے بوائے فرینڈ کو چاقو مار کر زخمی کردیا لیکن برطانوی عدالت نے اسے صرف اس وجہ سے جیل نہیں بھیجا کیونکہ وہ بہت ہی ہونہار طالبہ ہے اور اگر اسے جیل بھیجا گیا تو بطور ہارٹ سرجن اس کا کیریئر متاثر ہو سکتا ہے جو ملک و قوم کیلئے بڑے خسارے کا باعث ہوگا۔ برطانوی اخبار ڈیلی مرر کی رپورٹ کے مطابق 24 سالہ لوینیا ووڈ ورڈ کی سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹنڈر پر کیمبرج یونیورسٹی کے تعلیم یافتہ لڑکے سے ملاقات ہوئی جو محبت میں تبدیل ہوگئی۔ ایک دفعہ یہ جوڑا پارٹی کر رہا تھا کہ اسی دوران ان میں کسی بات پر جھگڑا ہوگیا جس پر لڑکی نے چاقو اٹھا کر لڑکے کی ٹانگ زخمی کردی۔اپنے بوائے فرینڈ کو چاقو مار کر زخمی کرنے والی لڑکی کو پولیس نے گرفتار کرلیا اور اسے کران کورٹ میں پیش کیا گیا ۔ کراون کورٹ میں سماعت کے دوران ملزمہ نے اعتراف جرم کرلیا تاہم اس کے کالج کی طرف سے عدالت کو بتایا گیا کہ ملزمہ بہت ہی غیر معمولی صلاحیتوں کی مالک ہے اور میڈیکل جنرلز میں اس کے شائع ہونے والے مقالوں نے میڈیکل سائنس پر گہرے اثرات مرتب کیے ہیں۔ جس کے بعد عدالت نے اسے جیل بھیجنے سے انکار کردیا، جج آئن پرینگل نے غیر معمولی صلاحیتوں کی مالک ہونے کے باعث ملزمہ کو چار ماہ کی ضمانت پر رہا کردیا۔

Oxford University student surgeon who stabbed Tinder boyfriend