اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

چین کے ساحل کے پاس فیری ڈوب گئی

ایر کینیڈا نے میرا چھٹیوں کا پروگرام غارت کر دیا

ایر کینیڈا نے میرا چھٹیوں کا پروگرام غارت کر دیا

آج کل ایر لائن بمپینگ ایک بڑا گرما گرم موضوع ہے۔ ایک اخبار نے اس کے متاثرین کے واقعات اکٹھے کرنے کی کوشش کی ہے۔ ایسی ہی ایک خاتون کی کہانی کسی قدر تخلیص سے پیش کی جاتی ہے
وکی رسل ایک ریٹائرڈ وکیل ہیں ۔ گلاپا گوس کی منفرد جنگلی حیات کا مشاہدہ ان کا ایک دیرینہ خواب تھا۔ اس سال انہوں نے اپنا یہ خواب پورا کرنے کی ٹھانی۔ انہوں نے نیو یارک میں لنڈ بلیڈ ایکسپیڈیشن ( Lindblad Expedition) سے نیشنل جیوگرافک ٹور کی بکنگ کرائی۔ اس میں ٹورانٹو سے میامی کا دو طرفہ سفر بھی شامل تھا۔ یکم اپریل کو صبح 8 بجے انہوں نے 10:55 پر روانہ ہونے والی پرواز کے بارے میں تصدیق چاہی تو انہیں بتایا گیا ۔ پرواز پر گنجائش سے زیادہ بکنگ ہو جانے کی وجہ سے ان کا ٹکٹ قابل قبول نہیں۔ انہوں نے ایجنٹ کو بیایا کہ انہوں نے واقعی میں ٹکٹ خریدا ہے اور انہیں میامی سے منسلکہ پرواز لینی ہے تو ایجنٹ نے ان کے ساتھ بڑی بد تمیزی سے بات کی۔ اس بحث مباحثے میں پرواز کی روانگی کا وقت ہو گیا تو انہیں ایر کینیڈا کسٹمر سروس سے رجوع کرنے کو کہا گیا۔ وہاں پہنچ کر معلوم ہوا کہ متبادل پرواز سے بھی وہ اگلی منسلکہ پرواز حاصل نہ کر سکیں گی کیونکہ ان کا سامان جو چیک ان ہو چکا تھا وہ انہیں سہ پہر کو 2 بجے واپس ملا۔ رسل کا مؤقف تھا کہ اگر یہ صورت حال انہیں چیک ان کے وقت ہی بتا دی جاتی تو وہ کسی متبادل پرواز سے وقت پر میامی پہنچ سکتی تھیں۔ بہر حال ان کا پروگرام تو غارت ہو گیا تھا ۔ وہ اس پیکیج پر 10,320 ڈالر خرچ کر چکی تھیں ۔ ایر کینیڈا ان کو 800 ڈالر ادا کر کے اپنے فرض سے سبکدوش ہو چکی تھی۔ تاہم خوش قسمتی سے جب انہوں نے ٹور کمپنی کو ساری صورت حال سے آگاہ کیا تو انہوں نے ان کو کسی اگلے ٹور میں جگہ دینے پر رضا مندی کا اظہار کر دیا۔ سوائے اس کے کہ ٹورانٹو سے میامی کا سفر انہیں اپنے خرچ پر کرنا پڑے گا۔ رسل اس غیر متوقع پیش کش پر پھولے نہیں سماتیں۔ لیکن ان کا کہنا ہے کہ اب وہ ایر کینیڈا کی بجائے کسی اور فضائی کمپنی کا انتخاب کریں گی۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ ابھی بھی ایر کینیڈا کی طرف سے مناسب انداز میں معذرت کی منتظر ہیں۔

loading...