اشاعت کے باوقار 30 سال

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں چھائے ہوئے مندی کے بادل چھٹ گئے

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں چھائے ہوئے مندی کے بادل چھٹ گئے

کراچی: پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کے روز چھائے ہوئے مندی کے بادل چھٹ گئے اور کے ایس ای 100 انڈیکس 7 بالائی حد عبور کرنے کے ساتھ 47 ہزار سے زائد پوائنٹس کی نفسیاتی سطح پر بحال ہو گیا۔ تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 1 کھرب سے زائد روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے سرمائے مجموعی حجم 93 کھرب سے بڑھ کر 94 کھرب روپے پر جا پہنچا۔ بدھ کو کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 729.11 پوائنٹس کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے کے ایس ای 100 انڈیکس 46874.37 پوائنٹس سے بڑھ کر 47603.48 پوئنٹس پر جا پہنچا اسی طرح 433.72 پوائنٹس کے اضافے سے کے ایس ای 30 انڈیکس 25292.04 پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 32170.97 پوائنٹس سے بڑھ کر 32593.87 پوائنٹس پر بند ہوا۔ کاروباری تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 1 کھرب 20 ارب 77 کروڑ 85 لاکھ 72 ہزار 734 روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم 93 کھرب 41 کروڑ 89 لاکھ 41 ہزار 162 روپے سے بڑھ کر 94 کھرب 21 ارب 19 کروڑ 75 لاکھ 13 ہزار 896 روپے ہو گیا۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کے روز 26 کروڑ 56 لاکھ 84 ہزار حصص کے سودے ہوئے اور ٹریڈنگ ویلیو 15 ارب روپے ریکارڈ کی گئی جبکہ منگل کے روز 16 کروڑ 44 لاکھ 50 ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے اور ٹریڈنگ ویلیو 9 ارب روپے تک محدود رہی تھی۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کے روز مجموعی طور پر 373 کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 219 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ، 136 میں کمی اور 18 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ کاروبار کے لحاظ سے کے الیکٹرک لمیٹڈ 2 کروڑ 24 لاکھ، ٹی آرجی پاک لمیٹڈ 2 کروڑ، اینگرپولیمر 1 کروڑ 71 لاکھ، بینک آف پنجاب 1 کروڑ 18 لاکھ اور عائشہ اسٹیل مل 1 کروڑ 15 لاکھ حصص کے سودوں سے سرفہرست رہے۔ قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے اعتبار سے رفحان میظ کے بھاؤ میں 200 روپے اور انڈس موٹرکارپوریشن کے بھاؤ میں 61.74 روپے کا اضافہ جبکہ اسلینڈ ٹیکسٹائل کے بھاؤمیں 50 روپے اور شیلڈکروپ کے بھاؤ میں 31.74 روپے کی نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی۔