اشاعت کے باوقار 30 سال

یونائیٹڈ ایئر کے حصص کی قیمت میں کمی

یونائیٹڈ ایئر کے حصص کی قیمت میں کمی

ایک مسافر کو زبردستی گھسیٹ کر پرواز سے اتارے جانے کی وڈیو عام ہونے کے بعد لوگوں کا رد عمل یوں سامنے آ یا کہ یونائیٹڈ کے حصص کی قیمت میں کمی دیکھی گئی۔ شکاگو سے لوئی ول جانے والی پرواز سے مسافر کو زبردستی اتارے جانے کی وڈیو منگل کے دن تک 130 ملین لوگوں نے دیکھی۔ ایشیا میں اس واقعہ کے خلاف رد عمل کمپنی کے لئے مسئلہ بن گیا ہے۔ یونائیٹڈ کسی بھی دوسری ایئر لائن کی نسبت چین کے زیادہ شہروں کے لئے زیادہ نان سٹاپ پروازیں چلاتی ہے۔ 2016 میں کمپنی کی آمد کا 14 فی صد بحر اوقیانوس کے پار پروازوں سے ہی حاصل ہوا تھا۔ صرف منگل کے دن کمپنی کے حصص میں ایک فی صد کمی دیکھی گئی جب کہ اس سے پہلے ہی کمپنی کے حصص 4 فی صد گر چکے تھے۔ منگل کی شام کو یونائیٹڈ ایئر کے چیف ایگزیکٹو آفیسر آسکر مونوز نے ایک پیغام کے ذریعے واقعہ پر شرمندگی کا اظہار کیا اور اس پر معافی بھی مانگی۔ انہوں نے کہا کہ میں اس واقعہ پر بے حد شرمندہ ہوں اور اس سلسلے میں دل کی گہرائیوں سے معذرت کا خواہاں ہوں۔ میں زبردستی اتارے جانے والے مسافر اور اس پرواز کے دوسرے مسافروں سے بھی معافی کا طلب گار ہوں۔ ایسا بالکل نہیں ہونا چاہئے تھا۔ مارکیٹنگ کی پروفیسر مونیکا لابارج کے مطابق پبلک ریلیشننگ کے نقطہ نظر سے کمپنی کے لئے یہ ایک بہت بڑا دھچکا ہے اور اس کے اثرات بد سے بد تر ہوتے جا رہے ہیں۔