اشاعت کے باوقار 30 سال

آج کا دن تاریخ میں

واکس ویگن کی ابتدا

کاروبار کے آخری روز پاکستان اسٹاک مارکیٹ مندی کی زد میں آ گئی

کاروبار کے آخری روز پاکستان اسٹاک مارکیٹ مندی کی زد میں آ گئی

کراچی: کاروبار کے آخری روز پاکستان اسٹاک مارکیٹ مندی کی زد میں رہی اور کے ایس ای 100 انڈیکس 2 بالائی حد کھوتا ہوا 49300 پوائنٹس سطح پر بند ہوا۔ مندی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے 18 ارب سے زائد روپے ڈوب گئے جس سے سرمائے کا حجم 98 کھرب سے گھٹ کر 97 کھرب روپے پر آ گیا۔ جمعہ کو کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 212.59 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے کے ایس ای 100 انڈیکس 49588.30 پوائنٹس سے کم ہو کر 49375.71 پوائنٹس پر آ گیا اسی طرح 161.82 پوائنٹس کی کمی سے کے ایس ای 30 انڈیکس 26695.57 پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 33548.84 پوائنٹس سے گھٹ کر 33484.56 پوائنٹس پر بند ہوا۔ جمعہ کے روز مارکیٹ کے سرمائے میں 18 ارب 85 کروڑ 3 لاکھ 39 ہزار 40 روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم 98 کھرب 16 ارب 93 کروڑ 23 لاکھ 24 ہزار 473 روپے سے کم ہو کر 97 کھرب 98 ارب 8 کروڑ 19 لاکھ 85 ہزار 433 روپے رہ گیا۔ جمعہ کو مارکیٹ میں 37 کروڑ 33 لاکھ 3 ہزار حصص کے سودے ہوئے اور ٹریڈنگ ویلیو 20 ارب روپے ریکارڈ کی گئی جبکہ جمعرات کے روز 26 کروڑ 32 لاکھ 60 ہزار حصص کے سودے ہوئے اور ٹریڈنگ ویلیو 14 ارب روپے تک محدود رہی تھی۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں جمعہ کے روز مجموعی طور پر 416 کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 225 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ، 178 میں کمی اور 13 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ کاروبار کے لحاظ سے کے الیکٹرک لمیٹڈ 2 کروڑ 84 لاکھ، پاور سیمنٹ لمیٹڈ 2 کروڑ 50 لاکھ، دوست اسٹیل لمیٹڈ 2 کروڑ 42 لاکھ، عائشہ اسٹیل مل 1 کروڑ 98 لاکھ اور بینک آف پنجاب 1 کروڑ 56 لاکھ حصص کے سودوں سے سرفہرست رہے۔ قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے اعتبار سے رفحان میظ کے بھاؤ میں 379 روپے اور ملت ٹریکٹرز کے بھاؤ میں 52.63 روپے کا اضافہ جبکہ وائیتھ پاک لمیٹڈ کے بھاؤ میں 204.77 روپے اور سپائیر ٹیکسٹائل کے بھاؤ میں 67.80 روپے کی نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی۔